یمنی فوج نے سعودی اتحاد کے دو حملوں کو پسپا کر دیا، متعدد فوجی ہلاک

0

اقوام متحدہ کے نمائندہ مارتین گریفیتس نے یمن کی فوج اور تحریک انصاراللہ کی جانب سےسعودی اتحاد کے 3 سو پچاس قیدیوں کو آزاد کرنے کے فیصلے کی خوش آئند قرار دیا اسٹاک ہوم سمجھوتے کے تناظر میں مزید اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے۔۔۔

صنعاء (میزان نیوز) یمنی فوج نے مختلف محاذوں پر جارح سعودی اتحاد کے حملوں کو پسپا کرتے ہوئے انہیں بھاری جانی اور مالی نقصان پہنچایا ہے، المسیرہ ٹیلی ویژن چینل نے یمن کے ایک فوجی ذریعے کے حوالے سے خبردی ہے کہ یمنی فوج نے صوبہ البیضا میں الزاھر محاذ پر جارح سعودی اتحاد کی فوجوں کی پیش قدمی کو روک دیا اور انہیں بھاری جانی اور مالی نقصان پہنچایا ہے، یمنی فوج نے جنوبی صوبے تعز میں بھی الطویر محاذ پر جارح سعودی اتحاد کے حملے کو پسپا کردیا، یمنی فوج کے ایک ذریعے نے بتایا ہے کہ یمنی فوج نے سعودی عرب کے اندر جیزان میں النار پہاڑیوں پر سعودی فوجی اڈوں پر حملہ کیا ہے اس حملے میں بھی متعدد سعودی فوجی ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں، یمن کے مذکورہ فوجی ذریعے نے بتایا ہے کہ یمنی فوج کے اسنائپروں کی کارروائی میں بھی جارح سعودی اتحاد کے کم سے کم اکیس فوجی ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں، قبل ازیں جارح سعودی اتحاد نے یمن کے شمالی صوبے صعدہ میں شدا کے رہائشی علاقوں پر راکٹوں اور توپ خانوں سے حملہ کیا دوسری طرف یمن کے امور میں اقوام متحدہ کے خصوصی نمائندے مارتین گریفیتس نے یمن کی فوج اور عوامی رضاکار فورس کی جانب سے سعودی اتحاد کے کچھ قیدیوں کو رہا کئے جانے کا خیر مقدم کیا ہے، فارس نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مارتین گریفیتس نے پیر کو ایک بیان میں یمن کی فوج اور تحریک انصاراللہ کی جانب سے سعودی اتحاد کے تین سو پچاس قیدیوں کو آزاد کرنے کے فیصلے کی قدردانی کی، گریفیتس نے اس بیان میں اسٹاک ہوم سمجھوتے کے تناظر میں مزید اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے اور متصادم گروہوں سے جنگی قیدیوں کی آزادی، ان کی منتقلی اور واپسی کیلئے ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کرنے کا مطالبہ کیا، تحریک انصار اللہ کی قیدیوں سے متعلق کمیٹی کے سربراہ عبدالقادر مرتضی نے پیر کو تین سعودی فوجیوں سمیت سعودی اتحاد کے تین سو پچاس قیدیوں کو آزاد کرنے کی خبر دی تھی اور سعودی اتحاد سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ بھی اسی جیسے اقدام کے ذریعے اپنی نیک نیتی ثابت کرے، سعودی اتحاد کے قیدیوں کی رہائی ایسے عالم میں انجام پا رہی ہے کہ سعودی عرب پہلی ستمبر سے اس مقام پر بمباری کر رہا ہے جہاں ان قیدیوں کو رکھا گیا ہے ۔ سعودی بمباری میں دسیوں سعودی قیدی ہلاک ہوچکے ہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply