اپوزیشن اتحاد کا پہلا جلسہ نواز شریف کی فوج کے خلاف ہرزہ سرائی

0

فضل الرحمٰن نے ملکی اسٹیبلشمنٹ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ سلیکٹیڈ کے سلیکٹرز کہتے ہیں کہ ہمارا نام نہیں لینا، کیوں نہ لیں آپ کا نام آپ نے جمہوریت کو بیچ چوراہے پر قتل کیا ہے کیا سلیکٹرز اپنے سلیکٹیڈ کی کارکردگی سے خوش ہیں؟۔۔۔

گوجرانوالہ (میزان نیوز) پی ڈی ایم کے تحت گوجرانوالہ میں ہونے والے جلسے سے بذریعہ ویڈیو لنک خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ(ن) کے تاحیات قائد نواز شریف نے بھارتی بیانیہ کو آگے بڑھاتے ہوئے ایک بار پھر پاکستانی فوج پر الزامات عائد کرتے ہوئے پاکستان کی فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ پر مسلم لیگ(ن) کی حکومت کو رخصت کرانے سنگین الزام عائد کیا ہے جبکہ وہ اس الزام کے حق میں دلائل نہیں دے سکے، جس پر ملک بھر میں عوام کا شدید ردعمل کا سلسلہ جاری ہے، عوام کی قابل ذکر تعداد نے کہا ہے کہ نواز شریف فوج پر الزام تراشی کرکے اپنے اوپر مقدمات ختم کرانے اور قومی خزانہ لوٹ کر بنائی گئی دولت کو بچانا چاہتے ہیں، نواز شریف نے اپنی تقریر میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ پر الزامات عائد کرتے ہوئے کہا کہ یہ سب کچھ آپ کے ہاتھوں سے ہوا ہے، آپ کو نواز شریف کو غدار کہنا ہے ضرور کہیئے، اشتہاری کہنا ہے ضرور کہیئے، نواز شریف کے اثاثے جائیداد ضبط کرنا ہے ضرور کریں، مقدمات بنوانے ہیں بنوائیے لیکن نواز شریف مظلوم عوام کی آواز بنتا رہے گا، نواز شریف عوام کو ان کے ووٹ کی عزت دلوا کر رہے گا، مسلم لیگ ن کی رہنما مریم نواز شریف نے گوجرانوالہ میں پی ڈی ایم کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے موجودہ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان آج تمام اداروں کے ایک صفحے پر ہونے کا کہتے ہیں، یاد رکھو صفحہ تبدیل ہوتے وقت نہیں لگتا، جمعیت علمائے اسلام(ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے گوجرانوالہ میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم پاکستان کے اداروں کا احترام کرتے ہیں، فوج سے ہماری کوئی لڑائی نہیں لیکن اگر دفاع کی ذمہ داری کے علاوہ آپ سیاست میں دخل اندازی کرتے ہیں، اپنی نگرانی میں انتخابات کرواتے ہیں، مارشل لا لگاتے ہیں، آئین کی پامالی کرتے ہیں تو آپ کے خلاف کلمہ حق بلند کرنا ہمارا نہیں تو کس کا کام ہے، انھوں نے ملکی اسٹیبلشمنٹ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ‘سلیکٹیڈ کے سلیکٹرز کہتے ہیں کہ ہمارا نام نہیں لینا، کیوں نہ لیں آپ کا نام آپ نے جمہوریت کو بیچ چوراہے پر قتل کیا ہے، کیا سلیکٹرز اپنے سلیکٹیڈ کی کارکردگی سے خوش ہیں؟ اس جلسے سے پیپلزپارٹی کے نوجوان چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بھی خطاب کیا، جلسے میں شریک افراد کا 90 فیصد کا تعلق مسلم لیگ(ن) سے تھا، جس سے ایک بار پھر ثابت ہوگیا کہ بلاول کی کوششوں کے باوجود پنجاب میں پیپلزپارٹی اپنا کھویا ہوا مقام حاصل کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے اور اس جلسے میں تیسرے درجے کی جماعت بن کر اُبھری ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply