پریمیئر لیگ نیو کاسل، خاشقجی قاتل سعودی ولیعہد کو فروخت نہ کرئے

0

اقوامِ متحدہ کے خصوصی نمائندہ کے مطابق خاشقجی کو جان بوجھ کر سوچ سمجھ کر قتل کیا گیا اور سعودی عرب کی ریاست اس ماورائے عدالت قتل کی ذمہ دار ہے واشنگٹن پوسٹ کے لکھاڑی جمال جاشقجی سعودی حکومت کے ناقدین میں شامل تھے۔۔۔

استنبول (میزان نیوز) مقتول سعودی صحافی جمال خاشقجی کی منگیتر نے پریمیئر لیگ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ سعودی شاہی خاندان کو برطانوی فٹ بال کلب نیوکاسل یونائیٹڈ فروخت نہ کریں، انگلش فٹ بال کلب نیوکاسل یونائیٹڈ اور سعودی شہزادے محمد بن سلمان کی نگرانی میں کام کرنے والے سعودی انویسٹمنٹ فنڈ کے درمیان کلب کی فروخت کا معاہدہ طے پانے والا ہے، تاہم جمال خاشقجی کی منگیتر ہاتف چنگیز کے وکلا کا کہنا ہے کہ یہ معاہدہ سعودی صحافی کے قتل کے معاملے کی وجہ سے روکا جانا چاہیئے، جمال خاشقجی 2018ء میں ترکی میں سعودی قونصل خانہ کے اندر قتل ہوئے، مغربی انٹیلی جنس ایجنسیوں کا کہنا ہے کہ قتل ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے حکم پر کیا گیا لیکن انھوں نے اس بات کی تردید کی ہے، اقوامِ متحدہ کی ایک خصوصی نمائندہ کا کہنا ہے کہ خاشقجی کو جان بوجھ کر، سوچ سمجھ کر قتل کیا گیا اور سعودی عرب کی ریاست اس ماورائے عدالت قتل کی ذمہ دار ہے، 59 سالہ صحافی جمال خاشقجی قتل ہونے سے پہلے واشنگٹن پوسٹ کیلئے کام کرتے تھے اور سعودی حکومت کے ناقدین میں شامل تھے، نیوکاسل یونائیٹڈ کے مالک برطانوی تاجر مائیک ایشلے ہیں جنہوں نے یہ کلب 2008 میں خریدا تھا اور پھر 2017 میں انھوں نے اسے فروخت کرنے کی کوشش کی، اس معاہدے کی مالیت تین سو ملین پاؤنڈ بتائی جارہی ہے لیکن اس معاہدے کی وجہ سے بہت سارے مسائل کھڑے ہوگئے ہیں، سعودی عرب پر پریمیئر لیگ کے کمرشل حقوق کی چوری کا الزام لگایا گیا ہے جبکہ انسانی حقوق کے ادارے ایمنسٹی انٹرنیشنل نے سعودی حکومت کے انسانی حقوق کے ریکارڈ کا حوالہ دیتے ہوئے اس ڈیل پر تنقید کی ہے، ایمنسٹی انٹرنیشنل کا کہنا ہے کہ سعودی عرب اپنے برے انسانی حقوق کے ریکارڈ سے توجہ ہٹانے کیلئے اسپورٹس واشنگ کررہا ہے جس کا مطلب ہے کہ سعودی عرب کھیلوں کے بڑے مقابلوں کا انعقاد کروا کر اپنے ملک کی شہرت کو بہتر کرنے کی کوشش کررہا ہے، تاہم جمال خاشقجی کی منگیتر ہاتف چنگیز کے وکلا نے ان کی طرف سے لکھے گئے ایک خط میں کہا ہے کہ پریمیئر لیگ کو یہ معاہدہ بلاک کرنا چاہیئے، خط میں پریمیئر لیگ اور اس کے چیف ایگزیکٹو رچرڈ ماسٹرس کو مخاطب کرکے لکھا گیا ہے کہ ہاتف چنگیز کے منگیتر کے بہیمانہ قتل کے بعد ان کیلئے درست، مناسب اور قانونی فیصلہ اس ڈیل کو بلاک کرنا ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply