پاکستان کیلئے آئی ایم ایف کا معطل، مالیاتی پروگرام جلد بحال ہو جائیگا

0

کرونا وائرس کے باعث پاکستان کو درپیش اقتصادی بحران کا سامنا رہا اور پاکستان کی جانب سے وہ اہداف حاصل نہیں کئے جاسکے جو آئی ایم ایف کیساتھ رواں پروگرام کے تحت طے ہوئے تھے، جس کی وجہ سے مالیاتی پروگرام معطل کردیا گیا تھا۔۔۔

اسلام آباد (میزان نیوز) پاکستان کے وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے امید ظاہر کی ہے کہ کرونا وائرس کے باعث پاکستان کیلئے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف) کا معطل شدہ مالیاتی پروگرام جلد بحال ہو جائے گا، انہوں نے بتایا کہ اس ضمن میں آئی ایم ایف کے ساتھ جاری گفت و شنید کو باضابطہ شکل دینے کیلئے وفد چند ہفتوں میں پاکستان آئے گا، وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے بتایا کہ آئی ایم ایف مشن ٹیکس اصلاحات، وصولیاں اور بجلی کے شعبے میں بہتری کے بارے حکومتی اقدامات کا جائزہ لے گا، ان کے بقول آئی ایم ایف مشن کے دورہ اسلام آباد کے بعد یہ پروگرام مکمل طور پر اپنی درست سمت میں گامزن ہو جائے گا، آئی ایم ایف نے گزشتہ سال جولائی میں پاکستان کیلئے چھ ارب ڈالر کے توسیعی فنڈ سہولت کی منظوری دی تھی، قرض کی یہ رقم تین سال کے عرصے میں وقتاً فوقتاً قسط وار جاری کی جانی تھی لیکن اس کیلئے پاکستان کو اقتصادی اصلاحاتی پروگرام وضع کرنے کا پابند کیا گیا تھا، پاکستان کو اب تک آئی ایم ایف سے ایک ارب 44 کروڑ ڈالرز دو اقساط میں مل چکے ہیں، تاہم کرونا وائرس کے باعث پاکستان کو درپیش اقتصادی بحران کا سامنا رہا اور پاکستان کی جانب سے وہ اہداف حاصل نہیں کئے جاسکے جو آئی ایم ایف کیساتھ رواں پروگرام کے تحت طے ہوئے تھے، جس کی وجہ سے مالیاتی پروگرام معطل کردیا گیا تھا، مشیر خزانہ کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ معاملات اچھے انداز میں چل رہے ہیں اور مالیاتی ادارے نے کرونا وائرس کے اثرات سے نمٹنے کیلئے ایک ارب 40 کروڑ ڈالر اضافی فوری فراہم بھی کیے تھے۔

Share.

About Author

Leave A Reply