پاکستان سعودی تعلقات میں تبدیلی آئی ہے آئندہ توازن خراب نظر آئیگا

0

ایسا نہیں ہو سکتا کہ پاکستان سعودی عرب کے تعلقات جو ستر سال سے ہیں ویسے ہی رہیں، ان میں تبدیلی آئے گی پاکستان سعودی عرب تعلقات میں کشیدگی ایک ایم وجہ پاکستان کی خارجہ پالیسی کو پاکستانی عوام کی اُمنگوں کے مطابق ڈھالنا ہے۔۔۔

اسلام آباد (میزان نیوز) پاکستان کے قومی سلامتی کے مشیر معید یوسف کا کہنا ہے کہ پاکستان سعودی عرب تعلقات میں تبدیلی تو آئی ہے لیکن اس تبدیلی کی وجہ کوئی ایک ملک نہیں بلکہ دنیا کی بدلتی ہوئی صورت حال ہے، امریکی کرنسی کی قدر کم ہو رہی ہے، چین ابھر رہا ہے، دنیا میں طاقت کے نئے مرکز بن رہے ہیں، بہت سے مسلم ممالک نے اسرائیل کو تسلیم کرلیا ہے، امریکہ میں نئی حکومت آنے سے کچھ تبدیلی متوقع ہے، ایسی صورت حال میں یہ تواقع نہیں کی جا سکتی کہ پاکستان کے تعلقات بھی ایک جیسے رہیں گے، معید یوسف کا کہنا ہے کہ ایسا نہیں ہو سکتا کہ پاکستان سعودی عرب کے تعلقات جو ستر سال سے ہیں ویسے ہی رہیں، ان میں تبدیلی آئے گی اور اگلے کچھ ماہ تک پاکستان سعودی تعلقات کا توازن خراب نظر آئے گا، سعودی عرب کی جانب سے قرضے کی جلد ادائیگی کے مطالبے سے متعلق معید یوسف کا کہنا ہے کہ سعودی عرب ایک خود مختار ملک ہے اور انھوں نے فیصلہ کیا کہ اس وقت ہمیں یہ پیسے پاکستان سے واپس چاہیں تو پاکستان نے اسی وقت اس قرض کی ادائیگی کردی، پاکستان سعودی تعلقات کا اتار چڑھاؤ گزشتہ دو سال میں کافی واضح رہا ہے، 2018 میں جب عمران خان نے حکومت سنبھالی تو پاکستان کی معاشی صورت حال اور قرضوں کی ادائیگی سے متعلق مشکلات سے نمٹنے کیلئے سعودی عرب نے پاکستان کو تین ارب ڈالر کا نہ صرف قرضہ دیا بلکہ اتنی ہی قیمت کا ادھار تیل فراہم کرنے کا بھی وعدہ کیا تھا جو پورا نہیں ہوسکا، پاکستان سعودی عرب تعلقات میں کشیدگی ایک ایم وجہ پاکستان کی خارجہ پالیسی کو پاکستانی عوام کی اُمنگوں کے مطابق ڈھالنا ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply