ٹرمپ کی خطے میں آمد، ہندوستان مذموم کارروائی کرسکتا ہے،پاکستان

0

پاکستانی دفتر خارجہ کی ترجمان نے امریکا کیطرف سے انڈیا کو فضائی دفاع کے ہتھیاروں کے مربوط نظام کی فروخت کے فیصلے کو پریشان کن قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے پہلے سے مسائل کا شکار خطہ مزید عدم استحکام کا شکار ہوگا۔۔۔

اسلام آباد (میزان نیوز) پاکستان کے دفتر خارجہ کی ترجمان عائشہ فاروقی نے خبردار کیا ہے کہ آئندہ 10 روز میں عالمی رہنماؤں کے خطے کے دورے کے درمیان نئی دہلی کی جانب سے کوئی ممکنہ (مذموم) کارروائی کی جاسکتی ہے، ہفتہ وار بریفنگ کے دوران ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ خطے کے اعلیٰ سطح دوروں کے درمیان انڈیا کی جانب سے خلل پیدا کرنے کے امکانات پر ہمیں تحفظات ہیں، دوران گفتگو پاکستان نے امریکا کی طرف سے انڈیا کو فضائی دفاع کے ہتھیاروں کے مربوط نظام کی فروخت کے فیصلے کو پریشان کن قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے پہلے سے مسائل کا شکار خطہ مزید عدم استحکام کا شکار ہو جائے گا، عائشہ فاروقی نے کہا کہ انڈیا کو ایسے جدید ہتھیاروں کی فروخت سے خطے میں اسٹریٹیجک توازن بگڑے گا کیونکہ اس سے پاکستان اور خطے کی سلامتی پر اثرات مرتب ہوں گے، انہوں نے کہا کہ امریکا اور انڈیا کے درمیان دفاعی تعلقات جنوبی ایشیا میں امن و سلامتی کی صورتحال میں عدم استحکام کا باعث ہیں، ترجمان نے کہا کہ جنوبی ایشیا ہتھیاروں کی دوڑ اور تصادم کا متحمل نہیں ہوسکتا، اس لئے عالمی برادری پر یہ ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ خطے کو عدم استحکام کا شکار ہونے سے بچائے، انہوں نے کہا کہ عالمی برادری پاکستان کے خلاف انڈیا کی جارحانہ پالیسی، عزائم اور انڈیا کی سیاسی اور عسکری قیادت کے دھمکی آمیز بیانات سے بخوبی آگاہ ہے، انڈیا کی طرف سے جنگ بندی معاہدے کی بڑھتی خلاف ورزیوں پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے عائشہ فاروقی نے کہا کہ انڈیا نے اس سال کے آغاز سے اب تک 272 مرتبہ جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا ہے جن کے نتیجے میں 3 شہری شہید اور 25 شدید زخمی ہوئے، اس موقع پر انہوں نے انڈیا کی جانب سے جعلی آپریشن کا خطرہ ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ خطے میں ترک صدر رجب طیب اردوان اور اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کے دورہ پاکستان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دورہ انڈیا کے موقع پر انڈیا کی جانب سے توجہ ہٹانے کے لئے کسی قسم کی کارروائی کی جا سکتی ہے۔  

Share.

About Author

Leave A Reply