وزیراعظم کا وکلا تقریب میں شرکت پر جسٹس عیسیٰ نے نوٹس جاری کردیا

0

اسلام آباد (میزان نیوز) پاکستان کی سپریم کورٹ نے وکلا کی تقریب میں شرکت پر وزیراعظم عمران خان کو نوٹس جاری کردیا، جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہا کہ وزیراعظم پورے ملک کا ہے، کسی ایک گروپ کا نہیں، وزیراعظم ریاست کے وسائل کا غلط استعمال کیوں کررہے ہیں، عدالت نے اٹارنی جنرل، ایڈووکیٹ جنرل پنجاب، انچارج کنونشن سینٹر، متعلقہ وزارتوں کو بھی نوٹسز جاری کردیئے، جائیداد سے متعلق مقدمے میں ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کے پیش نہ ہونے پر سپریم کورٹ برہم ہوگئی، جسٹس فائزعیسیٰ نے کہا کہ ایڈووکیٹ جنرل کنونشن سینٹر میں ہونے والے سیاسی اجتماع میں بیٹھے رہے، عدالت میں پیش نہ ہوئے، ایڈووکیٹ جنرل پورے صوبے کا ہوتا ہے یا کسی سیاسی جماعت کا نمائندہ ہوتا ہے، جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہا کہ وزیراعظم پورے ملک کا ہے، کسی ایک گروپ کا نہیں، وزیراعظم ریاست کے وسائل کا غلط استعمال کیوں کررہے ہیں، جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہا کہ معاملہ آئین کی تشریح اور بنیادی حقوق کا ہے، بظاہر کنونشن سنٹر میں وزیراعظم نے ذاتی حیثیت میں شرکت کی، وزیراعظم کی کسی خاص گروپ کے ساتھ لائن نہیں ہوسکتی، وزیراعظم نے وکلا کی تقریب میں شرکت کرکے ایک گروپ کی حمایت کی، انچارج کنونشن سنٹر بتائیں کہ کیا اس تقریب کے اخراجات ادا کئے گئے؟، وزیراعظم نے نجی حیثیت میں کنونشن سنٹر کا استعمال کیا، وزیراعظم ملک کے ہر فرد کا وزیراعظم ہے، جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہا کہ وزیراعظم کا رتبہ بہت بڑا ہے، یہ تقریب کسی پرائیویٹ ہوٹل میں ہوتی تو اور بات تھی، جسٹس عیسیٰ نے معاملے پر بنچ تشکیل دینے کیلئے عدالتی حکم نامہ چیف جسٹس کو ارسال کردیا، یاد رہے کہ جسٹس فائز عیسیٰ کے خلاف صدارتی ریفرنس بھیجا تھا۔

Share.

About Author

Leave A Reply