مودی کے اقوام متحدہ آنے پر احتجاج ہوگا بیرون ملک پاکستانی شرکت کریں

0

پاکستان بھارت کیساتھ کئے ہر معاہدے پر نظرثانی ہوگی پیپلزپارٹی تنقید کرتی ہے جبکہ بلاول کی قیادت میں صرف اس بنیاد پر پارلیمان کا اجلاس چلنے نہیں دیا کیونکہ زرداری کو پارلیمان لانے کیلئے اسپیکر اسمبلی نے پروڈکشن آرڈر جاری نہیں کیا تھا۔۔۔

آزاد کشمیر (میزان نیوز) پاکستانن کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اگلے ماہ ستمبر میں وزیراعظم عمران خان آپ کا مقدمہ لڑنے اقوام متحدہ جارہے ہیں، انھوں نے ملک سے باہر موجود ہر پاکستانی اور کشمیری سے اپیل کی کہ جب انڈین وزیراعظم نریندر مودی اقوام متحدہ پہنچیں تو وہ پاکستانی اقوام متحدہ کے باہر احتجاجاً موجود ہوں، انھوں نے کہا کہ اصولی، قانونی طور پر کشمیریوں کا مقدمہ بہت مضبوط ہے، عمران خان کے اقوام متحدہ جانے سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ سکیورٹی کمیٹی اور پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ پاکستان ان انڈین اقدامات کے خلاف اقوام متحدہ جائے گا، انھوں نے کہا کہ شملہ معاہدہ اور لاہور ڈیکلریشن کے باوجود (مسئلہ کشمیر پر) کوئی پیش رفت نہیں ہوئی، وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ شملہ معاہدے میں معاملات کو دوطرفہ روابط سے حل کرنے کا ذکر تھا لیکن اس پر حملہ بھارت نے خود کیا ہے اس لئے پاکستان نے بھارت کے ساتھ اپنے معاہدوں کو ریویو کرنے کا فیصلہ کیا ہے، نیشنل سکیورٹی کونسل میں وزیراعظم عمران خان نے میری سربراہی میں ایک اعلیٰ سطحی کمیٹی تشکیل دی ہے جس میں ہم ان معاہدوں کا جائزہ لیں گے، شاہ محمود قریشی نے کہا کہ انڈیا کشمیریوں کی آہ و بکا پر اپنے کان بند کر لیتا ہے، منھ پھیر لیتا ہے۔ اس لیے ہم اقوام متحدہ کا دروازہ کھٹکھٹانے کا فیصلہ کر چکے ہیں، اُدھر یی پی پی کے نوجوان چیئرمین بلاول بھٹو نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے جہاں تحریک انصاف کی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا وہیں انھوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت قیادت دکھائے، واضح رہے پیپلزپارٹی حکومت پر تنقید تو کرتی ہے مگر جب کشمیر کے موضوع پر پارلیمان کا مشترکہ اجلاس بلایا گیا تو پیپلزپارٹی نے بلاول بھٹو کی قیادت میں صرف اس بنیاد پر اجلاس چلنے نہیں دیا کہ ملزم زرداری کو پارلیمان لانے کیلئے اسپیکر قومی اسمبلی نے پروڈکشن آرڈر جاری نہیں کیا تھا، یاد رہے پیپلزپارٹی کی قیادت اس وقت کرپشن کے الزام میں نیب کے زیر حراست ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply