نواز لیگ، تحریک عدم اعتماد کے خیال پر بلاول بھٹو سے متفق نہیں

0

مسلم لیگ(ن) کے سیکریٹری جنرل احسن اقبال کے مطابق جہاں تک اِن ہاؤس تبدیلی پر نواز لیگ کی سوچ کا تعلق ہے ہم سمجھتے ہیں کہ بلاول بھٹو کے پاس عدم اعتماد کی تحریک لانے کیلئے مطلوبہ تعداد موجود ہے تو انہیں یقینی طور پر ظاہر کرنا ہوگا۔۔۔

لاہور (میزان نیوز) فضل الرحمٰن کی زیر قیادت پی ڈی ایم اس وقت آئی سی یو میں سانسیں گِن رہی ہے، جبکہ حافظ حسین احمد نماز جنازہ پڑھانے کیلئے حالت قیام میں ہیں، نواز لیگ اس نتیجے پر پہنچ چکی کہ پیپلز پارٹی جنازہ نہلانے کیلئے تیاریاں کررہی ہے، شہبازشریف اور حمزہ دونوں ابھی جیل میں ہی رہنا چاہتے ہیں، اسی لئے باپ بیٹے نے اپنی اپنی ضمانتوں کی درخواستیں عدالتوں سے واپس لے لیں ہیں تاکہ مریم نواز کی سیاست انجام تک پہنچ جائے تاکہ یہ باپ بیٹے بآسانی نواز لیگ کی قیادت سنبھال سکیں اور مریم نواز گھر میں رہ کر خاندانی روایتوں کا پاس کریں، اس دوران پی ڈی ایم کے تابوت میں کیل ٹھوکنے کیلئے بلاول بھٹو نے جمہوری انداز میں اِن ہاؤس تبدیلی کا راگ الاپا ہے، اِن ہاؤس تبدیلی تو بلاول کی والدہ کے خلاف بھی کامیاب نہیں ہوئی تھی جبکہ اُن کے پاس بھی اکثریت نہیں تھی، عمران خان کی پوزیشن تو بے نظیر بھٹو سے بہت زیادہ اچھی ہے، مسلم لیگ(ن) کے سینئر رہنما احسن اقبال نے پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو مخاطب کرکے کہا ہے کہ وہ موجودہ حکومت کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک کی حمایت کرنے کیلئے مطلوبہ تعداد ظاہر کریں کیونکہ اس طرح کی ایک کوشش پہلے ناکام ہوچکی ہے، لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ(ن) کے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ جہاں تک مسلم لیگ(ن) کی سوچ کا تعلق ہے، ہم سمجھتے ہیں کہ اگر بلاول بھٹو زرداری کے پاس عدم اعتماد کی تحریک لانے کیلئے مطلوبہ تعداد موجود ہے تو انہیں یقینی طور پر ظاہر کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ‘ہم نے (ماضی میں) سینیٹ انتخاب میں دیکھا جہاں پیپلز پارٹی اکثریت میں تھی لیکن (اس کے باوجود) عدم اعتماد کی تحریک کامیاب نہیں ہوسکی لہذا صرف ایک ہی راستہ ہے جس پر ہمیں چلنا چاہیے اور وہ یہ ہے کہ حکومت کے خلاف فیصلہ کن لانگ مارچ کو آگے بڑھایا جائے

Share.

About Author

Leave A Reply