لکس ایوارڈز تنازع کا شکار، فنکاروں کا نامزدگیاں واپس لینے کا اعلان

0

لکس ایوارڈز کیلئے اپنی نامزدگیوں سے دستبردار ہونیوالی شخصیات مطابق اس بار جیوری نے ایسے شخص کو ایوارڈ کیلئے نامزد کیا جن پر ایک خاتون کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام ہے فنکاروں کے اعلان نے صورتحال کشیدہ کردی ہے ۔۔۔

کراچی (میزان نیوز) پاکستان رواں برس 30 مارچ کو لکس ایوارڈز کی جانب سے نامزدگیوں کے اعلان کے فوری بعد ہی اس پر تنقید شروع ہوگئی تھی، ابتدائی طور پر اداکار محسن عباس حیدر، موسیقار شانی ارشد اور پروڈیوسر عبداللہ سیجا سمیت دیگر شخصیات نے 18 ویں ایوارڈز کی نامزدگیوں میں کچھ شخصیات کو نظر انداز کرنے پر جیوری کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا، تاہم اس کے بعد شوبز شخصیات اور خصوصی طور پر ایوارڈز کیلئے نامزد ہونے والی خواتین نے ایوارڈ سے علیحدگی کا اعلان کرنا شروع کردیا، لکس ایوارڈز کی نامزدگیوں سے الگ ہونے یا اپنی نامزدگیوں سے دستبردار ہونے والی شخصیات کے مطابق اس بار جیوری نے ایک ایسے شخص کو ایوارڈ کیلئے نامزد کیا جن پر ایک خاتون کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام ہے، خاتون کو جنسی طور پر ہراساں کرنے والے شخص کو ایوارڈ کیلئے نامزد کرنے پر سب سے پہلے ماڈل ایمان سلیمان نے اپنی نامزدگی سے دستبردار ہونے کا اعلان کیا تھا، ایمان سلیمان نے 31 مارچ کو لکس ایوارڈز کی نامزگی سے خود کو الگ کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ ایسے ایوارڈ کا حصہ نہیں بن سکتیں جس میں اس شخص کو بھی نامزد کیا گیا ہو جس پر خاتون کو ہراساں کرنے کا الزام ہو، ایمان سلیمان کے بعد ملبوسات کا برانڈ جینریشن اور میک اپ آرٹس صائمہ بارگفریڈ نے بھی اپنی نامزدگیوں سے دستربردار ہونے کا اعلان کیا تھا، انہوں نے بھی لکس ایوارڈز میں خاتون کو مبینہ طور پر جنسی طور ہراساں کرنے والے شخص کو نامزد کرنے کے خلاف نامزدگیاں چھوڑی تھیں، ان کے بعد گلوکارہ میشا شفیع نے بھی لکس ایوارڈ میں اپنی نامزدگی سے دستبرداری کا اعلان کیا تھا، میشا شفیع نے لکس ایوارڈز نامزدگیوں کا بائیکاٹ کرنے والی خواتین اور اداکاروں کی تعریف کی اور ساتھ ہی جیوری سے درخواست کی کہ ان کا نامزد کیا گیا گانا ووٹنگ سے ہٹایا جائے وہ اب اس کا حصہ نہیں رہیں گی، میشا شفیع کے بعد میوزک بینڈ اسکیچز نے بھی اپنی نامزدگی سے دستبرداری کا اعلان کیا، اسکیچز کے مطابق وہ می ٹو مہم کی حمایت کرتے ہیں اور ماڈل ایمان سلیمان اور میک اپ آرٹسٹ صائمہ بارگفریڈ کے بعد وہ بھی دستبرداری کا اعلان کرتے ہیں، اسی طرح ایک اور میک اپ آرٹسٹ فاطمہ ناصر نے بھی خاتون کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کے الزامات کا سامنا کرنے والے شخص کو ایوارڈ کیلئے نامزد کرنے پر اپنی نامزدگی سے دستبرداری کا اعلان کیا، دیگر شخصیات کی طرح پروڈیوسر جامی نے بھی لکس ایوارڈز میں اپنی نامزدگی سے دستبرداری کا اعلان کیا تھا، جامی کے مطابق وہ خواتین کا احترام کرتے ہوئے اور ان کے ساتھ اظہار یکجہتی کیلئے نامزدگی سے دستبردار ہو رہے ہیں، ان کے بعد ماڈل رباب علی نے بھی لکس ایوارڈز کی نامزدگی سے دستبرداری کا اعلان کیا، انہوں نے نامزدگی سے دستبرداری کا اعلان کرتے ہوئے شوبز میں خواتین کے ساتھ نامناسب رویوں اور انہیں جنسی طور پر ہراساں کرنے کے حوالے سے بھی بات کی، متعدد شوبز، میوزک و فیشن شخصیات کی جانب سے نامزدگیوں سے دستبرداری کے اعلان کے بعد فیشن ڈیزائنر اور لکس ایوارڈز کے ساتھ کام کرنے والی ڈائریکٹر فریحہ الطاف نے بھی اس حوالے سے اہم بیان جاری کیا، خیال رہے کہ لکس ایوارڈز نامزدگیوں کا اعلان رواں برس 30 مارچ کو کیا گیا تھا اور یہ ایوارڈز جولائی میں دیئے جائیں گے۔

Share.

About Author

Leave A Reply