فضل الرحمٰن تھیلے سے باہر فورسز کو دہشت گردوں سے ڈرانے لگے

0

فضل الرحمٰن تلخی اور غرور سے بھری ہوئی تقریر کرتے ہوئے بھول گئے کہ پاکستان کی مسلح افواج عالم اسلام کی سب سے موثر طاقت ہے جس نے طالبان دہشت گردوں اور لشکر جھنگوی کو خاک چٹائی ہے جن کی وہ درپردہ سرپرستی کیا کرتے تھے۔۔۔

اسلام آباد (میزان نیوز) پاکستان کے انسداد کرپشن ادارے احتساب بیورو(نیب) کی کارروائیاں شروع ہوتے ہی اپوزیشن کے قائدین کے لہجے میں تلخی واضح ہوچکی ہے اور تند و تیز بیانات میں میڈیا کی زینت بن رہے ہیں، مولانا فضل الرحمان کا ایک حالیہ بیان سوشل میڈیا پر ٹرینڈ کرتا رہا ہے جس میں انھوں نے کہا ہے کہ سیدھے ہوجاؤ کیونکہ ہم تو سیدھے ہیں نہیں تو افغانستان میں جو حشر امریکہ کا ہوا ہے وہ حشر یہاں تمہارا ہوگا، اس ویڈیو کلپ میں انھوں نے یہ نہیں بتایا کہ وہ کس کو مخاطب کرکے کہہ رہے ہیں تاہم سیاسی دانش رکھنے والے بتاتے ہیں کہ اُن کا مخاطب پاکستان کی سکیورٹی فورسز تھے، اس بیان کو انتہائی سخت موقف قرار دے رہے ہیں، ذرائع ابلاغ اور سوشل میڈیا پر یہ تاثر ہے کہ مولانا فضل الرحمان کے لب و لہجے میں سختی اُن کی کرپشن کی تحقیقات کیلئے احتساب بیورو کا وہ نوٹس ہے، جس نے اُنھیں پریشان کردیا ہے، مولانا فضل الرحمٰن نے دھمکی تو دے دی مگر وہ اس بات پر غور نہیں کرسکے کہ پاکستان کی مسلح افواج مولانا کی مربی سعودی حکومت کو تحفظ دیتی ہے، فضل الرحمٰن تلخی اور غرور سے بھری ہوئی تقریر کرتے ہوئے بھول گئے کہ پاکستان کی مسلح افواج عالم اسلام کی سب سے موثر طاقت ہے جس نے طالبان دہشت گردوں اور لشکر جھنگوی کو خاک چٹائی ہے جن کی وہ درپردہ سرپرستی کیا کرتے تھے، ادھر جمعیت علماء اسلام کے رہنما اور مولانا فضل الرحمان کے قریبی ساتھی موسیٰ خان کو چند روز پہلے گرفتار کرلیا گیا ہے، انھیں آمدن سے زائد اثاثے رکھنے سے متعلق انکوائری کے لیے حراست میں لیا گیا ہے، اس وقت وہ چھ روزہ ریمانڈ پر ہیں۔ موسیٰ خان سابق ڈسٹرکٹ فارسٹ آفیسر رہے ہیں اور ان کے ایک بیٹے محمد طارق مولانا فضل الرحمان کے پرائیویٹ سیکرٹری ہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply