فرانسیسی صدر نے انتہا پسندوں موقع اور اسلامو فوبیا کو فروغ دیا

0

صدر ایمانوئیل میکخواں نے تشدد کی راہ اپنانے والے دہشت گردوں، چاہے وہ مسلمان ہوں، سفید فام نسل پرست، یا نازی نظریات کے حامیوں پر حملہ کرنے کے بجائے اسلام پر حملہ کیا صدر نے دانستہ مسلمانوں بشمول اپنے شہریوں کو اشتعال دلایا ہے۔۔۔

اسلام آباد (میزان نیوز) پاکستان کے وزیرِاعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ایسے وقت میں جب فرانس کے صدر ایمانوئیل میکخواں انتہا پسندوں کو موقع فراہم کرنے کے بجائے مرہم رکھ سکتے تھے، یہ بدقسمتی ہے کہ انھوں نے اسلاموفوبیا کو فروغ دینے کا انتخاب کیا، وزیر اعظم عمران خان نے پیغمبر اسلام کے متنازع خاکوں پر فرانسیسی صدر کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ٹوئٹر پر سلسلہ وار ٹویٹس کی ہیں، اپنی ٹوئٹس میں وزیرِاعظم عمران خان نے کہا ہے کہ میکخواں نے تشدد کی راہ اپنانے والے دہشت گردوں، چاہے وہ مسلمان ہوں، سفید فام نسل پرست، یا نازی نظریات کے حامی، اُن پر حملہ کرنے کے بجائے اسلام پر حملہ کیا ہے، انھوں نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ صدر میکخواں نے دانستہ طور پر مسلمانوں بشمول اپنے شہریوں کو اشتعال دلایا ہے، عمران خان نے مزید کہا کہ ایک اچھے رہنما کی نشانی یہ ہوتی ہے کہ وہ لوگوں کو تقسیم کرنے کے بجائے متحد کرتا ہے جیسا کہ [نیلسن] منڈیلا نے کیا، واضح رہے کہ فرانس کے صدر ایمانوئیل میکخواں نے رواں ہفتے کے اوائل میں پیغمبرِ اسلام کے متنازع کارٹون کے حوالے سے فرانس کے مؤقف کا ایک مرتبہ پھر اعادہ کیا تھا، انھوں نے کہا تھا کہ فرانس ان سے دستبردار نہیں ہوگا، انھوں نے یہ بیان فرانس میں ایک ٹیچر کے قتل کے بعد دیا تھا جنھیں مبینہ طور پر پیغمبرِ اسلام کے متنازع خاکے کلاس میں دکھانے پر قتل کردیا گیا تھا، فرانسیسی صدر میکخواں نے اپنے ایک اور بیان میں کہا تھا کہ اسلام پوری دنیا میں بحران کا مذہب بن گیا ہے اور ان کی حکومت دسمبر میں مذہب اور ریاست کو الگ کرنے والے 1905 کے قوانین کو مزید مضبوط کرے گی، عمران خان سے قبل ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے بھی فرانسیسی صدر کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ میں ایسے رہنما کے بارے میں کیا کہہ سکتا ہوں جو مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والے لاکھوں لوگوں سے ایسا برتاؤ کرتا ہے، وہ پہلے دماغی علاج کروائیں، انھوں نے سوال کیا کہ میکخواں نامی اس شخص کو اسلام اور مسلمانوں سے مسئلہ کیا ہے؟ صدر اردوغان کے اس بیان کے بعد فرانس نے ترکی سے اپنا سفیر واپس بُلوا لیا ہے، پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کا یہ بیان مسلم اُمہ کے وسیع اتحاد کی علامت کے طور پر دیکھا جارہا ہے، اس سے قبل پاکستان ترکی کیساتھ آذربائیجان کی حمایت میں کھڑا ہے

Share.

About Author

Leave A Reply