عید تک ہفتہ اور اتوار کو مارکیٹیں کھولنے کا حکم نافذ رہیگا، چیف جسٹس

0

چیف جسٹس نے سماعت کے دوران کہا کہ یہاں سب لوگ پیسے سے کھیل رہے ہیں اور انسانوں کی کسی کو فکر نہیں ہے ہماری معیشت کا شمار افغانستان، یمن اور صومالیہ سے کیا جاتا ہے لیکن ہم پیسے سے کھیل رہے ہیں اور لوگوں کا احساس نہیں۔۔۔

اسلام آباد (میزان نیو) عدالت اعظمیٰ نے کہا ہے کہ ہفتہ، اتوار کو (مارکیٹیں) کھولنے کا حکم صرف عید تک کیلئے ہے، چیف جسٹس گلزار احمد نے کورونا وائرس ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا کے مشتبہ مریضوں کا سرکاری لیبارٹری سے ٹیسٹ مثبت اور نجی لیبارٹری سے منفی آتا ہے، یہاں سب لوگ پیسے سے کھیل رہے ہیں اور انسانوں کی کسی کو فکر نہیں ہے، سپریم کورٹ میں چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بینچ نے کورونا وائرس ازخود نوٹس کی سماعت کی، چیف جسٹس نے یہ بھی کہا کہ ہم بہت غریب ملک ہیں، ہماری معیشت کا شمار افغانستان، یمن اور صومالیہ سے کیا جاتا ہے لیکن ہم پیسے سے کھیل رہے ہیں اور لوگوں کا احساس نہیں ہے، نیشنل ہسپتال لاہور سے ایک آدمی کی ویڈیو دیکھی ہے وہ رو رہا ہے، چیف جسٹس نے کہا کہ ڈاکٹروں اور طبی عملے کو سلام پیش کرتے ہیں لیکن اس عملے میں جو خراب لوگ ہیں وہ تشویش کی وجہ ہیں، اس دوران چیئرمین نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) میجر جنرل افضل خان پیش ہوئے، اس کے علاوہ اٹارنی جنرل برائے پاکستان و دیگر حکام بھی عدالت میں موجود تھے۔عدالت عظمیٰ میں سماعت کے دوران ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے آگاہ کیا کہ لاک ڈاؤن پہلے جیسا مؤثر نہیں رہا، بیوٹی سیلون اور نائی کی دکانیں بھی کھل رہی ہیں، اس پر چیف جسٹس نے ایڈووکیٹ جنرل سندھ کو کہا کہ یہ ہماری وجہ سے نہیں کھل رہے بلکہ آپ کے انسپکٹر پیسے لے کر اجازت دے رہے ہیں جبکہ عدالت نے حکومت سندھ کو کچھ نہیں کہا، انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ نے تمام سرکاری دفاتر کھول دیئے ہیں، سب رجسٹرار کا آفس آپ نے کھول دیا ہے، بڑی کرپشن کا ادارہ سب رجسٹرار آفس ہے، کرپشن کے تمام اجلاس سب رجسٹرار آفس میں ہوتے ہیں، عوامی خدمت کیلئے نہیں سرکاری دفاتر کھولے ہیں، جسٹس سردار طارق کا کہنا تھا کہ مالز محدود جگہ پر ہوتے ہیں جہاں احتیاط ممکن ہے، راجا بازار، موتی بازار، طارق روڈ پر رش بہت زیادہ ہوتا ہے اس لئے مالز کھولنے کا الزام عدالت پر نہ لگائیں، اس پر اٹارنی جنرل نے کہا کہ عدالت کے ہفتہ، اتوار کے لاک ڈاؤن پر حکم سے ممکن ہے حکومت مطمئن نہ ہو لیکن اس پر عمل کیا جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ ہفتہ، اتوار کو (مارکیٹیں) کھولنے کا حکم صرف عید تک کیلئے دیا ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply