عمران حکومت، سالانہ دس ارب ڈالر غیر ملکی قرضہ واپس کررہی ہے

0

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں مالی سال 2018، 2019 اور 2020 میں حکومتی قرضوں کی واپسی کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی گئی موجودہ حکومت کو 30 کھرب روپے کا قرضہ ورثے میں ملا ملک کو دیوالیہ پن سے بچانے کیلئے قرضے لینے پڑے۔۔۔

اسلام آباد (میزان نیوز) پاکستان کی وفاقی کابینہ کے اجلاس میں بتایا گیا کہ وفاقی حکومت ہر سال 10 ارب ڈالر کے قرضے واپس کررہی ہے، سرکاری خبررساں ادارے اے پی پی کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں بتایا گیا کہ 3 کروڑ بچوں پر مشتمل اسکولوں میں تعلیم کا سلسلہ بحال ہو جائے گا جبکہ کورونا کے خلاف حفاظتی تدابیر بشمول ماسک کے استعمال پر سختی سے عمل کیا جائے، علاوہ ازیں وفاقی کابینہ نے برطانوی ایئرلائن ورجن اٹلانٹک کو پاکستان اور برطانیہ کے مابین پروازوں کے اجرا، ٹی سی پی کی جانب سے درآمد کی جانے والی گندم کے حوالے سے پری شپمنٹ ایجنسیوں کو پری شپمنٹ انسپیکشن کی ون ٹائم اور افغانستان کے حوالے سے مجوزہ ویزہ پالیسی کی اصولی منظوری دیدی، وفاقی کابینہ کے اجلاس میں مالی سال 2018، 2019 اور 2020 میں حکومتی قرضوں اور ان کی واپسی کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی گئی، کابینہ کو آگاہ کیا گیا کہ موجودہ حکومت کو 30 کھرب روپے کا قرضہ ورثے میں ملا جس کی قسطیں ادا کرنے اور ملک کو دیوالیہ پن سے بچانے کیلئے حکومت کو مزید قرضے لینے پڑے جبکہ بیرونی قرضوں کی مد میں حکومت نے تقریباً 24 ارب ڈالر قرضہ حاصل کیا جس میں سے 2 ارب ڈالر عبوری دورِ حکومت میں اٹھایا گیا، کابینہ کو بتایا گیا کہ بیرونی قرضوں کی مد میں گزشتہ دورِ حکومت میں ہر سال تقریباً ساڑھے پانچ ارب ڈالر کی شرح سے قرضے واپس کیے جاتے تھے لیکن موجودہ دورِ حکومت میں ہر سال تقریباً 10 ارب ڈالر کے حساب سے قرضے واپس کیے جارہے ہیں جبکہ کووڈ کی وجہ سے تقریباً ایک کھرب روپے کی آمدن متاثر ہوئی، اجلاس کو توانائی کے شعبے میں جاری اصلاحات خصوصاً گردشی قرضوں میں کمی لانے پر بریفنگ دی گئی اور آگاہ کیا گیا کہ ماضی کی حکومت کی پالیسیوں کی وجہ سے مالی سال 2018 میں سالانہ گردشی قرضہ 450 ارب روپے تھا اور اگر موجودہ حکومت کی جانب سے مختلف اقدامات نہ کیے جاتے تو سال 2020 میں یہ قرضہ 853 ارب روپے ہوتا اور 2023 میں اس میں 1610 ارب روپے کا اضافہ ہوتا، علاوہ ازیں کابینہ نے برطانوی ائیرلائن ورجن اٹلانٹک کو پاکستان اور برطانیہ کے مابین پروازوں کے اجرا کی منظوری دی۔

Share.

About Author

Leave A Reply