عمان کےسلطان کا انتقال والد کو معزول کرکے برسراقتدار آئے تھے

0

حیثم بن طارق بن تیمور کو عمان کا نیا سلطان مقرر کر دیا گیا سابق وزیرِ ثقافت اور حیثم بن طارق نے سنیچر کو شاہی خاندان کی کونسل کی میٹنگ کے بعد اپنے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے تخت کے اہم دعویداروں میں بھائی اسعد بن طارق بھی شامل تھے۔۔۔

مسقط (میزان نیوز) عرب دنیا میں سب سے طویل حکمرانی کرنے والے عمان کے سلطان قابوس بن سید السید 79 برس کی عمر میں انتقال کر گئے ہیں جس کے بعد حیثم بن طارق بن تیمور کو عمان کا نیا سلطان مقرر کر دیا گیا ہے، سلطان قابوس اپنے والد کی حکومت کا تختہ الٹنے سے برسراقتدار آئے تھے، سابق وزیرِ ثقافت اور حیثم بن طارق نے سنیچر کو شاہی خاندان کی کونسل کی میٹنگ کے بعد اپنے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے، اس سے قبل شاہی دربار سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ انتہائی غم اور گہرے رنج کے ساتھ شاہی دربار بادشاہ سلطان قابوس کی وفات پر غمزدہ ہے، جن کا جمعہ کے روز انتقال ہو گیا ہے، سلطان قابوس گزشتہ ماہ بیلجیئم میں طبی معائنے اور علاج کروانے کے بعد وطن واپس آئے تھے، اطلاعات کے مطابق وہ سرطان کے مرض میں مبتلا تھے، سلطان قابوس غیر شادی شدہ تھے اور ان کا کوئی وارث یا نامزد جانشین نہیں تھا، ان کی موت پر عمان میں تین روزہ قومی سوگ کا اعلان کیا گیا ہے، سلطان نے اپنے والد کو سنہ 1970ء میں برطانوی تعاون سے بغیر کسی خونخوار بغاوت کے معزول کر دیا تھا جس کے بعد تیل کی دولت کا استعمال کرتے ہوئے انھوں نے عمان کو ترقی کی راہ پر گامزن کر دیا، سلطنت کے بنیادی قانون کے مطابق، شاہی خاندان کی کونسل، جس میں تقریباً 50 مرد ارکان شامل ہیں تخت خالی ہونے کے تین دن کے اندر ایک نیا سلطان منتخب کرتے ہیں، اگر شاہی خاندان کسی نئے حکمران پر متفق نہیں ہوتا تو دفاع کونسل کے ممبران، سپریم کورٹ، مشاورتی کونسل اور ریاستی کونسل کے صدر ایک مہر بند لفافہ کھولیں گے جس میں سلطان قابوس نے خفیہ طور پر اپنی پسند کے تخت نشین کا کہا تھا اور اس شخص کو تخت نشین کردیا جائے گا، مبینہ طور پر سلطنت کے تخت کے اہم دعویداروں میں تین بھائی شامل تھے جو سلطان مرحوم کے چچا زاد بھائی ہیں، ان میں وزیر ثقافت حیثم بن طارق السید، نائب وزیر اعظم اسعد بن طارق السید اور عمان بحریہ کے سابقہ کمانڈر جو شاہی مشیر تھے، شہاب بن طارق السید شامل ہیں، سلطان، عمان میں اہم فیصلہ ساز شخصیت ہوتا ہیں جن کے پاس وزیر اعظم، مسلح افواج کے اعلیٰ کمانڈر، وزیر دفاع، وزیر خزانہ اور وزیر برائے امور خارجہ کے عہدے بھی ہوتے ہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply