شمالی وزیرستان میں فوج پر ریموٹ کنٹرول بم سے حملہ ایک اہلکار شہید

0

انڈیا پاکستان کے صوبہ بلوچستان اور قبائلی علاقوں میں بدامنی پیدا کرنے کیلئے مقامی دہشت گرد عناصر اور سہولت کاروں کو استعمال کررہا ہے ہندوستان قبائلی علاقوں میں بدامنی کیلئے افغانستان کی سرزمین کو استعمال کرتا ہے جس پر پاکستان احتجاج کرتا رہا ہے۔۔۔

پشاور (میزان نیوز) خیبر پختونخوا کے قبائلی ضلع شمالی وزیرستان کی تحصیل میران شاہ میں ریموٹ کنٹرول دھماکے کے نتیجے میں پاک فوج کے اہلکار شہید ہوگیا، پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق ریموٹ کنٹرول دھماکہ میران شاہ کے بویا روڈ پر سکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹ کے قریب ہوا، بیان میں کہا گیا کہ دھماکے کے نتیجے میں 33 سالہ سپاہی ساجد شہید ہوگئے، دھماکے کے بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کا محاصرہ کرکے کلیئرنس آپریشن شروع کردیا، واضح رہے کہ 4 ستمبر کو بھی شمالی وزیرستان میں پاک فوج کے قافلے کے قریب آئی ای ڈی دھماکے میں ایک افسر سمیت 3 اہلکار شہید ہو گئے تھے، ذرائع کا کہنا ہے کہ جنوبی اور شمالی وزیرستان میں فوجی آپریشن ختم ہونے کے بعد افغانستان سے آنے والے خاندان کیساتھ دہشت گرد بھی پاکستان پہنچے ہیں جنکو انڈیا سے مالی اور فنی مدد مل رہی ہے، حساس اداروں کا کہنا ہے انڈیا پاکستان کے صوبہ بلوچستان اور قبائلی علاقوں میں بدامنی پیدا کرنے کیلئے مقامی دہشت گرد عناصر اور سہولت کاروں کو استعمال کررہا ہے، یاد رہے کہ قبائلی علاقوں میں بدامنی کیلئے افغانستان کی سرزمین اور بلوچستان میں بدامنی کیلئے افغانستان اور ایرانی بلوچستان کو استعمال کیا جاتا ہے، پاکستان کی درخواست پر ایرانی حکومت نے دونوں ملکوں کی سرحدوں پر مزید فورسز تعینات کردیں ہیں جبکہ مشکوک دہشت گردوں کے کلاف کارروائیاں جاری ہیں یہ دہشت گرد پاکستانی اور ایرانی بلوچستان میں شرپسندیوں میں ملوث ہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply