شام میں امریکی پراکسیز کے خاتمے کیلئے آخری لڑائی کی تیاریاں شروع

0

ایران نے شام کے قبائل کو متحد کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے جبکہ شامی سرزمین سے امریکہ کو نکالنے کیلئے قبائلی فورس تشکیل دی جارہی ہے شام کے صوبے دیر الزور میں امریکی زیر سرپرستی میں دہشت گرد گروہ تیل کی چوری میں ملوث ہے۔۔۔۔

واشنگٹن (میزان نیوز) امریکی اور اسرائیلی ذرائع نے بتایا ہے کہ ایران نے شام کے مشرقی علاقوں میں اپنی عسکری موجودگی کو بڑھا ہے، ایران اور روس دہشت گرد تنظیم داعش سمیت امریکہ اور سعودی عرب کے حمایت یافتہ دہشت گرد گروہوں کے خاتمے کیلئے شامی حکومت کی مدد کررہے ہیں، تاہم امریکہ کی جانب سے دہشت گرد اور غیرسرکاری مسلح گروہوں کی سرپرستی کرکے داعش کی باقیات کو ختم کرنے کے آپریشن میں رکاوٹیں ڈال رہا ہے، شام کے صدر بشار الاسد کی حکومت کی مدد کیلئے وہاں موجود ایرانی دفاعی مبصرین نے مقامی لوگوں کی مدد سے مشرقی شام کے صوبے دیر الزور کے بعض علاقوں پر دمشق کا کنٹرول بحال کردیا ہے، ان میں خاص طور پر وہ حصے شامل ہیں جو عراق کی سرحد سے متصل ہیں، ایران کی پاسداران انقلاب اسلامی کی قدس فورس کے دفاعی مبصرین سنہ 2011ء میں امریکہ اور اسکے مقامی اتحادیوں کی مدد سے فساد کی کوششوں کو ناکام بنانے کیلئے شام میں موجود ہیں اور ہزاروں مقامی افراد کی مدد سے شام کے بڑے علاقے پر دمشق کا کنڑول بحال کیا ہے، امریکی میڈیا کے مطابق ایران نے حالیہ ہفتوں میں صوبہ دیر الزور میں مقامی افراد کی ملیشیا میں بھرتی کرنے کی کوششیں تیز کردی ہیں، مشرقی شام میں ہونے والی پیش رفت پر نظر رکھنے والے دیرازور ٹوینٹی فور نامی خبریں دینے اور تحقیق کرنے والے گروپ کے ڈائریکٹر عمر ابولیلی کا کہنا ہے کہ ایران نے شام میں بچے کچے دہشت گردوں اور بقول ایران امریکی دہشت گرد فوج کے مقابلے کیلئے مقامی شامی شہریوں کو بھرتی اور تربیت دینا شروع کردیا ہے، روس اور شام کی سرکاری افواج کا صوبہ دیرالزور کے بڑے حصّے پر دمشق کی رٹ بحال کردی ہے اور ایران نے دریائے فرات کے مغربی کنارے پر آباد چھوٹے قصبوں کو دہشت گردوں سے پاک کردیا ہے جوکہ زیادہ تر عراق کی سرحد کے قریب ہیں اور ان میں عراق کے ساتھ ایک سٹریٹیجک سرحدی گزر گاہ بھی شامل ہے، امریکہ کی زیر سرپرستی دہشت گرد گروہ ایس ڈی ایف سنہ 2019ء سے دریائے فرات کے مشرقی کنارے پر کنٹرول ہے اور اسی علاقے سے شام کا تیل چوری کیا جارہا ہے تاہم اب ایران اِن علاقوں کو امریکی حمایت یافتہ مسلح دہشت گردوں سے آزاد کرانے کیلئے مقامی قبائل کیساتھ ملکر جلد ہی بڑی کارروائی کرنے جارہا ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply