شام میں امریکی فضائی حملوں میں سات بچوں سمیت 16 شہری ہلاک

0

فرات کےمشرقی کنارے پر 4 اسکوائر کلومیٹر علاقےمیں 600 جنگجو موجودگی کی اطلاع پر فضائی کارروائی کی تاہم محصور عوام کی ایک عمارت کو نشانہ بنایا گیا جہاں صدر بشار الاسد کے حامیوں نے پناہ لے رکھی تھی ۔۔۔۔۔۔

دمشق (میزان نیوز) شام کے مشرقی صوبے میں امریکی فضائی حملوں میں 7 بچوں سمیت 16 شہری ہلاک ہوگئے، قطری نشریاتی ادارے الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق ایک  کارروائی کرتے ہوئے شمالی صوبے دیر الزور کے گاؤں باغوز میں میزائل داغے تھے جس کے نتیجے میں 16 شہری ہلاک ہوئے، امریکی حمایت یافتہ جنگی علاقے سے راتوں رات سینکڑوں افراد کے فرار کے بعد آج جھڑپیں جاری رہیں، عراق کی سرحد کے قریب دریائے فرات کے مشرقی کنارے پر 4 اسکوائر کلومیٹر علاقے میں 6 سو جنگجو موجود ہیں، امریکی حمایت یافتہ دہشت گردوں نے 9 فروری کو باغوز کا قبضہ دوبارہ حاصل کرنے کیلئے حتمی کوشش کا اعلان کیا تھا، امریکی اتحاد کے ترجمان سین ریان نے کہا کہ امریکی حمایت یافتہ دہشت گردوں کو شدید جوابی کارروائی کا سامنا ہے، انہوں نے کہا کہ داعش کے خلاف پیش رفت سست اور ضابطہ کار کے تحت جاری ہے کیونکہ دشمن مکمل تیاری کے ساتھ موجود ہے غیرریاستی جنگجو لگاتار جوابی حملے میں مصروف ہیں، سین ریان کا کہا تھا کہ امریکی اتحادی فوج دشمن کے ٹھکانوں پر حملے جاری رکھے ہوئے ہے، ترکی سے الجزیرہ کے نمائندے کا کہنا تھا کہ شامی گاؤں کے مضافات میں فضائی حملے 12 فروری کے ابتدائی گھنٹوں میں کیے گئے تھے، انہوں نے کہا کہ یہ فضائی حملے مخالفین کو علاقے سے فرار سے روکنے کیلئے کیے جاتے ہیں، گزشتہ روز جنگی علاقے سے ایک ہزار 5 سو شہری علاقے سے فرار ہوئے تھے جبکہ سینکڑوں شہری تاحال محصور ہیں، الجزیرہ کے نمائندے کے مطابق یہ سننے میں آیا ہے کہ امریکی حمایت یافتہ غیر ریاستی عناصر اور مسلح جنگجو علاقے میں محصور شہریوں کو محفوظ مقام پر منتقل کرنے کی اجازت کیلئے مذاکرات کررہے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ ابھی مذاکرات نہیں ہوئے، شہریوں کو گاؤں میں رکھنا داعش جنگجوؤں کے مفاد میں ہے، درحقیقت وہ انہیں یرغمال بنارہے ہیں، انہوں نے بتایا کہ گزشتہ روز ہونے والی جھڑپوں میں 12 ایس ڈی ایف اور 19 داعش جنگجو ہلاک ہوئے تھے، گزشتہ روز امریکی صدر نے کہا تھا کہ اتحادی فورسز آئندہ دنوں میں داعش کے خلاف جنگ میں فتح کا اعلان کریں گے۔

Share.

About Author

Leave A Reply