سامرا میں شیعہ مسلمانوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنانیکی سازش ناکام

0

عراق کی مسلح افواج کی مشترکہ کارروائی کا تیسرا مرحلہ جمعہ کو شروع ہوا ہے مسلح افواج کی اس کارروائی میں جلولا اور شمالی مقدادیہ میں دہشت گردوں کے ٹھکانوں کا پتہ لگا وہاں موجودد تمام جنگی ساز و سامان اپنے قبضے میں لے لیا ہے۔۔۔۔

بغداد (میزان نیوز) عراقی فوج نے مقدس شہر سامراء میں امریکی حمایت یافتہ تکفیری دہشت گردوں کے خلاف آپریشن میں متعدد دہشت گردوں اور شرپسندوں کو ہلاک و زخمی کردیا ہے، السومریہ نیوز کی رپورٹ کے مطابق عراقی سکیورٹی فورسز نے سامراء کے مختلف علاقوں میں داعش کے روپوش تکفیری دہشت گردوں کے خلاف کارروائی کی ہے جس میں متعدد تکفیری دہشت گرد ہلاک و زخمی ہوگئے ہیں، ذرائع کے مطابق داعش دہشت گرد عید کے موقع پر شیعہ مسلمانوں پر حملوں کا خطرناک منصوبہ رکھتے تھے، سکیورٹی فورسز نے خفیہ اطلاع پر دہشت گردوں کے خلاف کارروائی شروع کی اس دوران بڑے پیمانے پر اسلحہ اور بارود بھی برآمد ہوا، اُدھر اطلاعات آئی ہیں کہ عراق کے شمالی علاقے میں امریکی فوج کے آپریشن کے دوران ایک فوجی ہلاک ہوگیا، فارس خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے نینوا میں ایک امریکی فوجی دہشت گرد حملے میں ہلاک ہوگیا ہے، یاد رہے کہ امریکی فوج 2011ء میں اپنی عسکری ناکامی کی وجہ سے عراق سے نکل گئی جبکہ 2014ء میں داعش کے خلاف کارروائی کے بہانے عالمی اتحاد کی چھتری تلے دوبارہ عراق میں تعینات ہوئی، مشرقی عراق کے صوبے دیالہ میں داعش دہشت گرد گروہ کے باقی بچے کچے عناصر کے خلاف عراق کی سیکورٹی فورس کے حملے میں چار دہشت گرد ہلاک ہو گئے، المیادین ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق صوبے دیالہ میں یہ دہشت گرد بعقوبہ کے مشرق میں دہشت گردانہ حملے کرنے کا منصوبہ تیار کر رہے تھے، ایک اور خبر یہ ہے کہ صوبے دیالہ کے علاقوں کو آزاد کرانے کیلئے عراق کی مسلح افواج کی مشترکہ کارروائی کا تیسرا مرحلہ جمعہ کو شروع ہوا ہے، مسلح افواج کی اس کارروائی میں جلولا اور شمالی مقدادیہ میں دہشت گردوں کے ٹھکانوں کا پتہ لگا کر ان ٹھکانوں اور وہاں موجود تمام جنگی ساز و سامان اپنے کنٹرول میں لے لیا ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply