حزب اللہ جدید راکٹ حاصل کرنے میں کامیاب ہوچکی ہے، نصراللہ

0

فرزند رسولؐ حضرت امام حسینؑ کا راستہ عزت و کرامت حریت پسندی اور آزادی کا راستہ ہے اس راستے پر چلنے سے ہماری استقامت اور طاقت میں بھی اضافے کیساتھ ہمیں کامیابی کی طرف لے جارہا ہے ۔۔۔۔۔۔

بیروت (میزان نیوز) لبنان کی سیاسی اور عسکری تنظیم حزب اللہ نے کہا ہے کہ اسرائیل کی کوششوں کے باوجود وہ جدید ترین راکٹ حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے ہیں، تنظیم کے رہنما حسن نصراللہ نے شب عاشور حسینیؑ عزاداروں کو بتایا کہ اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ اسرائیلی انھیں روکنے کیلئے کیا کیا اقدامات کر رہا ہے کیونکہ حزب اللہ تو پہلے ہی ‘ٹھیک نشانے پر مار کرنے والے راکٹ حاصل کرچکی ہے، سید حسن نصراللہ نے کہا ہے کہ فرزند رسولؐ حضرت امام حسین علیہ السلام کا راستہ عزت و کرامت اور آزادی کا راستہ ہے، اسرائیل نے سنہ 2006 میں لبنان پر جارحیت کا ارتکاب کیا تھا جس کا حزب اللہ نے بھرپور جواب دیا اور اسرائیل کو جنگ بندی پر مجبور کردیا تھا، بدھ کی رات کو ٹی وی پر نشر ہونے والی ایک تقریر میں حسن نصراللہ نے اسرائیل کے الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیل حزب اللہ اور ایران کو صرف بہانے کے طور پر استعمال کررہا ہے، جمعرات کو صبح عاشورہ کی مجلس عزا سے خطاب میں کہ نواسہ رسولؐ حضرت امام حسینؑ کی راہ ہمیں کامیابی، عزت، کرامت، حریت پسندی اور مقبوضہ علاقوں  کی آزادی اور طاقت کے سوا کچھ دکھائی نہیں دیتا، انہوں نے حاضرین کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ حضرات یہاں سید الشہدا امام حسینؑ سے وفاداری کا اعلان کرنے کیلئے آئے ہیں اور اس کا اجر خدا کے پاس ہے۔لبنانانہوں نے کہا کہ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ہمارا راستہ وسیع، ہماری تعداد میں اضافہ، ایمان میں مضبوطی کے ساتھ ساتھ حضرت امام حسینؑ کے راستے پر چلنے سے ہماری استقامت اور طاقت میں بھی اضافہ ہوتا جارہا ہے، انھوں نے کہا کہ اسرائیل کی جانب سے کیے گئے درجنوں حملے ناکام بنادیئے ہیں، اسرائیل کو مخاطب کرکے سید حسن نصراللہ نے کہا تم جتنی بھی کوشش کرلو راستہ بند کرنے کی، یہ معاملہ اب ختم ہو چکا ہے اور ہمارے پاس ٹھیک نشانے پر مار کرنے والے راکٹ اور صلاحیت حاصل کرلی ہے، ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر اسرائیل نے لبنان پر جنگ مسلط کی تو اسے بھرپور جواب ملے گا، میزائیلوں کی بارش اسرائیل کا سکون تباہ کردے گی، اُنھوں نے کہا کہ عزاداران امام حسینؑ اُسی راستے کو اختیار کریں گے جو ذلت کا نہیں عزت کا راستہ ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply