جرمنی اور فرانس کا یورپ کی سلامتی کیلئے امریکا پر انحصار ختم کرنیکا عزم

0

ہیمبرگ میں واقع جرمن ملٹری یونیورسٹی میں اسٹوڈنٹس سے خطاب میں جرمن وزیر دفاع گریٹ کرامپ کارن باؤر کے مطابق یورپ کو اپنے تحفظ کیلئے خود متحرک ہونا چاہیئے اور سلامتی کے معاملات کے تحفظ کیلئے خود اپنے قدموں پر کھڑا ہونا چاہتا ہے۔۔۔

برلن (میزان نیوز) جرمن وزیر دفاع گریٹ کرامپ کارن باؤر نے کہا ہے کہ یورپ کو اپنے تحفظ کیلئے خود متحرک ہونا چاہیئے، یورپی ممالک چاہتے ہیں کہ اس براعظم کے سلامتی کیلئے امریکا اپنا کردار ادا کرتا رہے، جرمن وزیر دفاع آنے گريٹ کرامپ کارن باؤر نے کہا ہے کہ امریکا میں ڈیموکریٹ جو بائیڈن کے اقتدار میں آنے کے بعد واشنگٹن حکومت جرمنی سے امریکی افواج کے انخلا کا منصوبے پر نظرثانی کر سکتی ہے، صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جرمنی سے امریکی افواج واپس بلانے کا اعلان کر رکھا ہے، جرمن خاتون وزیر نے کہا کہ امریکی صدارتی الیکشن کی مہم کے دوران ڈیموکریٹ سیاستدان جو بائیڈن نے کہا تھا کہ کامیابی کی صورت میں وہ جرمنی میں متعین امریکی افواج کے حوالے سے جامع نظر ثانی کریں گے، انہوں نے کہا کہ کم از کم اتنا امکان ضرور ہے کہ اس منصوبے میں تبدیلی ضرور آئے گی لیکن دیکھنا ہے کہ آیا ٹرمپ انتظامیہ کا فیصلہ مکمل طور پر واپس لے لیا جاتا ہے یا کوئی ترامیم کی جاتی ہیں، ہیمبرگ میں واقع جرمن ملٹری یونیورسٹی میں اسٹوڈنٹس سے خطاب میں جرمن وزیر دفاع نے کہا کہ یورپ کو اپنے تحفظ کیلئے خود متحرک ہونا چاہیئے، انہوں نے اس تضاد کا بھی اعتراف کیا کہ ایک طرف تو یورپ امریکا کی عسکری مدد چاہتا ہے لیکن ساتھ ہی وہ اپنے سلامتی کے معاملات کے تحفظ کیلئے خود اپنے قدموں پر کھڑا ہونا چاہتا ہے، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دور میں یورپ اور امریکا کے مابین عسکری تعاون کے حوالے سے کئی سوالات اٹھ کھڑے ہوئے تھے، صدر ٹرمپ نے مغربی دفاعی اتحاد نیٹو میں یورپی ممالک کی مالی مدد کو شدید تنقید کا نشانہ بھی بنایا، جس میں جرمنی کو بالخصوص ہدف بنایا گیا تھا، جرمن وزیر دفاع نے کہا کہ عسکری صلاحیتوں کو بہتر بنانے کیلئے یورپ کو سب سے پہلے افریقہ میں جاری اپنے آپریشنز امریکا کے بغیر سرانجام دینا ہوں گے۔

Share.

About Author

Leave A Reply