تباہی کا شکار طیارہ لینڈنگ گئیر میں خرابی کی خبروں میں صداقت نہیں

0

خوش قسمتی سے جہاز ایک گلی میں گرا جس سے قریب کے مکانات کو نقصان ضرور ہوا لیکن کوئی عمارت گری نہیں جبکہ اب وہاں کوئی لاش بھی موجود نہیں ہے، تاہم ریسکیو آپریشن جاری ہے جسے مکمل ہونے میں دو سے تین روز لگیں گے۔۔۔

کراچی (میزان نیوز)  پاکستان انٹرنیشنل ائیر لائن کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ایئر مارشل ارشد ملک نے کہا ہے کہ راچی میں آبادی پر گر کر تباہ ہونے والے طیارے میں کوئی خرابی نہیں تھی تاہم تحقیقات کے بعد تمام حقائق سامنے آئیں گے، طیارہ تکنیکی طور پر مکمل فٹ تھا اور اس حال ہی میں انسپکشن ہوئی تھی، جہاز کے لینڈنگ گئیر میں خرابی کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں، حادثے کی تحقیقات کیلئے بین الاقوامی ٹیم بلائی جائے گی، پی آئی اے ٹریننگ سینٹر آڈیٹوریم میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حادثے کا شکار طیارہ تکنیکی طور پر مکمل فٹ تھا، انہوں نے بتایا کہ طیارہ ٹیک آف کرنے سے پہلے انجینئر سے کلیئر کرایا جاتا ہے، جہاز تکنیکی طور پر پوری طرح محفوظ تھا، جہاز کو لینڈنگ کی اجازت دے دی گئی تھی جس کے بعد پائلٹ گو راؤنڈ کرتا ہے جس سے متعلق کوئی شکوک و شبہات نہ رکھے، ہمارے پاس فلائٹ ڈیٹا ریکارڈر اور بلاک باکس ہوتا ہے جس میں ہر چیز سامنے آجاتی ہے، ان کا کہنا تھا کہ جہاز کے گو راؤنڈ کے بعد پائلٹ نے دوسری اپروچ کے لیے اسٹیبلش کرنے کی کال دی، جب وہ دوسری اپروچ کے لیے اسٹیبلش کرتے ہیں تو وہاں ان کے ساتھ کچھ ہوا جس سے متعلق وائس ریکارڈنگ اور ڈیٹا ریکارڈنگ میں بات سامنے آئے گی، طیارہ 2014ء میں لیز پر حاصل کیا گیا اور پی آئی اے کے فضائی بیڑے میں شامل کیا گیا تھا، جہاز کلیئر اور مکمل سرٹیفائیڈ تھا اورسابقہ آپریشن کے دوران طیارے کے تمام ضروری چیکس کو بروقت مکمل کیا گیا جبکہ جہاز کے انجن اور دیگر آلات کا اہم ترین الفا نامی انسپکشن چیک رواں سال کے مارچ میں مکمل کیا گیا تھا، ارشد ملک کا کہنا تھا کہ جہاز کے مین لینڈنگ گیئرسمیت کسی بھی پرزے میں کوئی ٹیکنیکل خرابی نہیں تھی، اس حوالے سے افواہیں گردش کررہی ہیں جن  میں کوئی صداقت نہیں، حادثہ کیسے ہوا؟ اس کی شفاف تحقیقات ہوں گی، انکوائری کیلئے بین الاقوامی ماہرین بلائیں گے جس کی سمری تیار ہوچکی ہے جبکہ پاکستان میں طیارہ حادثے کی تحقیقات سیفٹی انویسٹی گیشن بورڈ کرے گا،  یہ آزادانہ طور پر تحقیقات کرنے والا ادارہ ہے، اس ادارے کے تحقیقاتی عمل میں پی آئی اے کا کوئی کردار نہیں ہے، خوش قسمتی سے جہاز ایک گلی میں گرا جس سے قریب کے مکانات کو نقصان ضرور ہوا لیکن کوئی عمارت گری نہیں جبکہ اب وہاں کوئی لاش بھی موجود نہیں ہے، تاہم انہوں نے کہا کہ ریسکیو آپریشن جاری ہے جسے مکمل ہونے میں دو سے تین روز لگیں گے، قبل ازیں جمعہ کو پی آئی اے کا لاہور سے کراچی آنے والا مسافر طیارہ اے 320 ایئربس جناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ کراچی کے قریب رہائشی علاقے میں گر کر تباہ ہوگیا، جس میں اطلاعات کے مطابق 80 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply