ہندوستان سنی اور شیعہ فساد کرانے کیلئے علما کو قتل کروا رہا ہے، عمران

0

مولانا عادل خان شاہ فیصل کالونی میں مٹھائی خریدنے کیلئے رکے اور اُنکے ایک ساتھی عمیر جیسے ہی دوکان میں داخل ہوئے تو مسلح افراد نے گاڑی پر اندھا دھند فائرنگ شروع کردی جبکہ عمیر اس حادثے میں مکمل طور پر محفوظ رہے۔۔۔

کراچی/اسلام آباد (میزان نیوز) پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے جامعہ فاروقیہ کے مہتمم مولانا عادل خان کی ٹارگٹ کلنگ کی مذمت کی ہے، انہوں نے اپنے ٹوئٹ میں کہا کہ حکومت جانتی ہے اور میں نے یہ بات متعدد مرتبہ ٹی وی پر کہی ہے کہ پچھلے 3 ماہ سے بھارت کی طرف سے سنی اور شیعہ فساد کرانے کیلئے علما کو قتل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے تاکہ ملک بھر میں فرقہ وارانہ فسادات پیدا ہوسکیں، واضح رہے کراچی کے علاقے شاہ فیصل کالونی میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے جامعہ فاروقیہ کے مہتمم مولانا ڈاکٹر عادل خان اور ان کے ڈرائیور کو قتل کردیا، ڈاکٹر عادل خان وفاق المدارس کے سابق سربراہ مولانا سلیم خان مرحوم کے صاحبزادے تھے، باخبر حلقوں کا کہنا ہے کہ بھارت ایک طرف نوازشریف کو استعمال کرکے سیاسی افراتفری پھیلا رہا ہے جبکہ دوسری طرف فرقہ واریت کے ذریعے ملک میں عدم استحکام پیدا کروانے کیلئے سرگرم ہے اور مقصد پاکستانی فوج کو کمزور کرکے ایٹمی اثاثوں کو نقصان پہنچانا ہے، باخبر حلقے عوام سے ہوشیار اور پُرامن رہنے کی تلقین کررہے ہیں کیونکہ بھارت ایک مرتبہ پھر کراچی کو فرقہ واریت کا گڑھ بنایا چاہتا ہے جہاں ہزاروں پیشہ ور قاتل بے روزگار ہیں اور سماج کے ہر طبقے میں دستیاب ہوتے ہیں، حکام کے مطابق جامعہ فاروقیہ کے مہتمم مولانا عادل خان شاہ فیصل کالونی میں ایک شاپنگ سینٹر پر مٹھائی خریدنے کیلئے رکے اور اُن کے ایک ساتھی مولانا عمیر جیسے ہی دوکان میں داخل ہوئے تو مسلح افراد ان پر اندھا دھند فائرنگ شروع کردی اور بعدازاں فرار ہوگئے جبکہ مولانا عمیر اس حادثے میں مکمل طور پر محفوظ رہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply