بختاور بھٹو جنسی تعلیم کی حمایت کرکے زنا باالرضا کا راستہ کھولنا چاہتی ہیں

0

بختاور بھٹو زرداری کی جنسی تعلیم دینے سے متعلق ٹوئٹ پر کئی افراد نے کمنٹس کیے زیادہ تر افراد نے انہیں تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے یاد دلایا کہ انکی پارٹی بھی حکومت میں رہی ہے بختاور اور پیپلزپارٹی کی قیادت اسلامی سزاؤں پر اپنا موقف واضح کریں۔۔۔

کراچی (میزان نیوز) صوبہ پنجاب میں ملزمان کی جانب سے رات دیر گئے موٹروے پر مدد کی منتظر خاتون کو گینگ ریپ کا نشانہ بنائے جانے پر ملک بھر میں تاحال غم و غصے کا اظہار کیا جا رہا ہے، ساتھ ہی حکومت اور سیاستدانوں نے قانونی اصلاحات کے مطالبے سمیت مجرمان کو سرعام پھانسی دیئے جانے کا مطالبہ بھی کیا جارہا ہے، ملزمان کی گرفتاری اور انہیں قانونی کٹہرے میں لانے کیلئے حکومت کی کوششیں تاحال ملک بھر میں مذکورہ واقعے پر سیاسی و سماجی شخصیات کی جانب سے سخت غصے کا اظہار کیا جا رہا ہے، ساتھ ہی حکومت اور سیاستدانوں سے ریپ مجرمان کو سخت سزائیں دلوانے کیلئے قانونی اصلاحات کا مطالبہ بھی کیا جا رہا ہے، ایسے میں پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی بہن بختاور بھٹو نے ملک میں ریپ واقعات بڑھنے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو جنسی تعلیم کی ضرورت ہے، جس پر اُنھیں شدید تنقید کا سامنا ہے، عام لوگوں کی واضح اکثریت کا خیال ہے کہ بختاور بھٹو زنا باالرضا کا راستہ کھولنا چاہتی ہیں، بختاور اور پیپلزپارٹی کی قیادت پہلے اسلامی سزاؤں پر اپنا موقف واضح کریں کیونکہ اُن کی والدہ اسلامی سزاؤں پر قابل اعتراض رائے رکھتی تھیں، حیا بخاری نامی خاتون کی جانب سے کی جانی والی ایک ٹوئٹ کو شیئر کرتے ہوئے ملک میں ریپ کے بڑھتے واقعات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے بختاور نے ملک میں جنسی تعلیم کی ضرورت پر زور دیا۔ بختاور بھٹو نے مذکورہ ٹوئٹ کو شیئر کرتے ہوئے اپنی ٹوئٹ میں لکھا کہ ملک بھر میں مدرسوں سے لے کر پارکنگ کی جگہ ریپ واقعات بڑھ چکے ہیں اور خواتین و جانور گھروں میں بھی محفوظ نہیں ہیں، بختاور بھٹو زرداری نے لکھا کہ پاکستان میں جنسی تعلیم کی ضرور ہے، کیوں کہ یہ وہ جرم ہے، جسے رپورٹ ہی نہیں کیا جاتا، بختاور بھٹو زرداری کی مذکورہ ٹوئٹ پر کئی افراد نے کمنٹس کیے اور زیادہ تر افراد نے انہیں تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے یاد دلایا کہ ان کی پارٹی بھی حکومت میں رہی ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply