سلامتی کونسل، ایٹمی سائنسدان کے قاتلوں خلاف ایکشن لے، ایران

0

اقوام متحدہ میں سفارت کاروں کا خیال ہے کہ ایران کی اس درخواست پر شاید توجہ نہ دی جائے کسی کارروائی کیلئے کم از کم نو اراکین کی حمایت اور امریکا، فرانس، برطانیہ، روس اور چین کی جانب سے مخالفت میں ویٹو کا استعمال نہیں کیا جائے۔۔۔

نیویارک (میزان نیوز) ایران نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے اپنے چوٹی کے جوہری سائنس دان کے قتل کی مذمت اور قصورواروں کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے، تاہم سفارت کاروں کا خیال ہے کہ اس اپیل پر شاید توجہ نہ دی جائے، اگر پندرہ رکنی سلامتی کونسل کا کوئی رکن ایرانی جوہری سائنس داں محسن فخری زادہ کے قتل کے معاملے پر غور و خوض کیلئے درخواست دیتا ہے تو سلامتی کونسل بند دورازے میں اس پر اجلاس بلا کر اور اراکین کے درمیان اتفاق رائے ہونے پر کوئی بیان جاری کرسکتی ہے، سفارت کاروں کے مطابق کوئی بیان جاری کرنے کے حوالے سے بھی کسی طرح کی بات چیت نہیں ہوئی ہے، سلامتی کونسل بین الاقوامی امن اور سلامتی برقرار رکھنے کیلئے ذمہ دار ہے اور اسے کسی کے خلاف فوجی کارروائی یا پابندیاں عائد کرنے کا حکم دینے کا بھی اختیار ہے لیکن اس طرح کے اقدامات کیلئے کم از کم نو اراکین کی حمایت اور پانچ مستقل اراکین امریکا، فرانس، برطانیہ، روس اور چین کی جانب سے مخالفت میں ویٹو کا استعمال نہیں کیا جانا چاہیئے، گوکہ ایرانی جوہری پروگرام کے بانی محسن فخری زادہ کے قتل کی ذمہ داری ابھی تک کسی نہیں قبول کی ہے تاہم ایران نے اس کیلئے اسرائیل کو مورد الزام ٹھہرایا ہے، اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو کے دفتر نے اس قتل کی ذمہ داری لینے کے سوال پر کسی قسم کا تبصرہ کرنے سے انکار کردیا ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply