آشیانہ اقبال ریفرنس میں شہبازشریف کی حاضری استشنیٰ کا حکم معطل

0

شہباز شریف کو 5 اکتوبر 2018 کو نیب لاہور نے آشیانہ اقبال ہاؤسنگ کیس میں حراست میں لیا تھا پراسیکیوٹر نے استدعا کی تھی کہ شہباز شریف کو اس کیس میں بھی ذاتی حیثیت میں طلب کیا جائے جس کے بعد احتساب عدالت نے شہباز شریف کو طلب کرلیا۔۔۔

لاہور (میزان نیوز) پاکستان میں انسداد کرپشن کیلئے قائم لاہور کی احتساب عدالت نے آشیانہ اقبال ریفرنس کیس میں مسلم لیگ(ن) کے صدر و قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف کو ذاتی حیثیت میں طلب کرلیا، خیال رہے کہ احتساب عدالت نے شہباز شریف کو حاضری سے استثنیٰ کا حکم دیا تھا جو واپس لے لیا گی، احتساب عدالت کے جج نے آشیانہ اقبال ریفرنس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے کہ ملزم باقی کیسز میں قومی احتساب بیورو(نیب) کی عدالتوں میں پیش ہوتا ہے، انہوں نے ریمارکس دیے کہ شہباز شریف اس وقت جیل حکام کی حراست میں ہیں اور دوسرے کیسز میں پیش ہوتے ہیں، احتساب عدالت کے جج نے حکم دیا کہ آشیانہ ریفرنس اہم نوعیت کا کیس ہے جس میں ملزم شہباز شریف ذاتی حیثیت میں پیش ہوں، عدالت نے شہباز شریف کو 26 جنوری کو پیش ہونے کا حکم دے دیا، تحریری حکم میں کہا گیا کہ پراسیکیوٹر نیب نے توجہ دلائی کہ شہباز شریف دوسرے ریفرنس میں گرفتار ہیں، پراسیکیوٹر کے مطابق شہباز شریف کو دوسری عدالت میں پیش کیا جاتا ہے اور مستقل استثنی کے حوالے سے اب صورتحال تبدیل ہو چکی، تحریری حکم میں پراسیکیوٹر کے حوالے سے کہا گیا کہ انہوں نے استدعا کی کہ شہباز شریف کو اس کیس میں بھی ذاتی حیثیت میں طلب کیا جائے، جس کے بعد احتساب عدالت نے جیل حکام کو حکم دیا کہ آئندہ سماعت پر شہباز شریف کو پیش کیا جائے، واضح رہے کہ شہباز شریف کو 5 اکتوبر 2018 کو نیب لاہور نے آشیانہ اقبال ہاؤسنگ کیس میں حراست میں لیا تھا۔

Share.

About Author

Leave A Reply