امریکہ ایکبار پھر پاکستان چین دوستی خراب کرنیکی ناکام کوشش کررہا ہے

0

امریکی سفارتکار ایلس ویلز کے مطابق سی پیک منصوبے میں شریک چینی کمپنیوں کو منافع کی جس نامناسب شرح کی یقین دہانی کرائی گئی ہے اس کی وجہ سے امریکا کو پاکستان چین اقتصادی راہداری پر تحفظات ہیں چین ڈومور کا مطالبہ نہیں کرتا۔۔۔

اسلام آباد / واشنگٹن (میزان نیوز) پاکستان میں چینی سفارتخانے نے پاک چین اقتصادی راہداری کے حوالے سے امریکی سفیر ایلس ویلز کے بیان کو غیرذمہ دارانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ امریکا نے پاک چین تعلقات خراب کرنے کی ناکام کوشش کی ہے، ایک روز قبل امریکی نائب معاون وزیر خارجہ ایلس ویلز نے کہا کہ سی پیک کے سودے پاکستان کے عوام کیلئے شفافیت پر مبنی ہونے چاہئیں، ویڈیو لنک کے ذریعے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سی پیک یا دوسرے ترقیاتی منصوبوں کیلئے ہم سرمایہ کاری کو عالمی معیار کے مطابق دیکھنا چاہتے ہیں، سی پیک میں شفافیت کی کمی پر ہمیں سخت تشویش ہے، کورونا وائرس کی وبا کی وجہ سے چین پاکستان کے غیرمنصفانہ ادھار کی شرائط تبدیل کرئے ایلس ویلز نے مزید کہا کہ چین قرضوں کے حوالے سے غیرمنصفانہ شرائط ختم کرے اور سی پیک کے سودے پاکستان کےعوام کیلئے شفافیت پر مبنی ہونے چاہئیں، انہوں نے کہا کہ شفافیت کی کمی اور اس منصوبے میں شریک چینی کمپنیوں کو منافع کی جس نامناسب شرح کی یقین دہانی کرائی گئی ہے اس کی وجہ سے امریکا کو پاکستان چین اقتصادی راہداری پر تحفظات ہیں، پاکستان میں چینی سفارتخانے نے ایلس ویلز کے بیان کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے بالکل بے بنیاد اور ان کے سابقہ لہجے کی تکرار قرار دیا، بیان میں کہا گیا کہ ہم پاکستان کو برابر کا شراکت دار سمجھتے ہیں اور ہم نے پاکستان سے کبھی بھی ڈومور کا مطالبہ نہیں، پاکستان کے ترقی کے منصوبے کی حمایت کرتے ہیں اور ان کے مقامی معاملات میں کبھی مداخلت نہیں کی، ہم نے ہمیشہ خطے میں پاکستان کے ذمہ دارانہ کردار کو اجاگر کیا اور کبھی بھی ان پر دباؤ نہیں ڈالا، چین نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری دراصل پاکستان اور چین کی حکومتوں کے درمیان باہمی تعاون پر مبنی ایک منصوبہ ہے، اس میں ہمیشہ باہمی فوائد، تعاون اور شفافیت کا مظاہرہ کیا گیا۔

Share.

About Author

Leave A Reply