امریکہ، جنوبی یمن میں داعش اور القاعدہ کا اڈہ بنانا چاہتا ہے، انصاراللہ

0

جنوبی یمن پر امریکہ اور برطانیہ کا کنٹرول ہے سعودی اتحاد اب واشنگٹن اور لندن کے احکامات پر عمل کررہا ہے امریکہ جنوبی یمن کے ایک علاقے میں داعش لانے کی کوشش کررہا ہے تاکہ جنوبی یمن پر براہ راست قبضے کا جواز پیدا کرئے ۔۔۔

صنعا (میزان نیوز) یمنی فوج کی جوابی کارروائیوں میں دسیوں سعودی حمایت یافتہ دہشت گرد ہلاک ہوگئے ہیں، دوسری طرف تحریک انصاراللہ کے سیاسی شعبے کے رکن عبدالوھاب محبشی الیمنی نے کہا ہے کہ امریکہ جنوبی یمن کو داعش اور القاعدہ کے دہشت گردوں کا اڈہ بنانا چاہتا ہے، یمن کے نیم سرکاری ٹیلی ویژن چینل المسیرہ کے مطابق جنوبی سعودی عرب کے صوبہ العسیر میں یمنی فوج کی کارروائیوں میں دسیوں مسلح سعودی ایجنٹوں کے مارے جانے کی خبر نشر کی ہے، یہ جارح سعودی اتحاد کے فوجی صوبہ العسیر کے مجاورہ علاقے میں گھات لگا کر انجام دی جانے والی ایک کارروائی میں ہلاک ہوئے ہیں، یمن کی فوج نے جنوبی سعودی عرب کے جیزان میں الطوال علاقے کے مضافات میں سعودی اتحاد کا حملہ پسپا اور ان کی پیشقدمی روک دی ہے، دوسری جانب یمن کی تحریک انصاراللہ نے کہا ہے کہ امریکہ جنوبی یمن کو داعش اور القاعدہ دہشت گردوں کا اڈہ بنانا چاہتا ہے، المیادین ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق تحریک انصار اللہ کے سیاسی شعبے کے رکن عبدالوہاب المحبشی نے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ جنوبی یمن کی صورت حال سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے ہاتھ سے نکل چکی ہے، انہوں نے کہا کہ جنوبی یمن پر اب پوری طرح امریکہ اور برطانیہ کا کنٹرول ہے اور سعودی عرب اور امارات اب صرف واشنگٹن اور لندن کے احکامات پر عمل کررہے ہیں، تحریک انصاراللہ کے سیاسی شعبے کے رکن عبدالوہاب المحبشی نے مزید کہا کہ امریکہ جنوبی یمن کے ایک علاقے میں داعش اور القاعدہ کو لانے کی کوشش کررہا ہے تاکہ جنوبی یمن میں اپنا براہ راست اثر و رسوخ بڑھانے کا جواز پیدا کر سکے، عبدالوہاب المحبشی نے یاد دہانی کرائی کہ امریکہ، عراق اور شام میں روپوش داعش دہشت گردوں کو جنوبی یمن میں پہنچانا چاہتا ہے تاکہ خود کو جنوبی یمن سے داعش دہشت گردوں کو نکالنے کے بہانے جنوبی یمن پر خود قبضہ کر لے، ان دنوں جنوبی یمن ایک جارح کے بعد دوسرے جارح کے قبضے میں جا رہا ہے اور اس کے بعض شہروں پر کھبی سعودی عرب حمایت یافتہ دہشت گردوں کا قبضہ ہوتا ہے تو کبھی امارات کے حمایت یافتہ مسلح جنگجووں کا قبضہ کرلیتے ہیں اور اس طرح سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کا فوجی اتحاد یمن پر جارحیت کیلئے اپنی طاقت کا مظاہرہ کررہا ہیں اور پراکسی وار کی قیمت یمن کے غریب اور مظلوم عوام کو چکانا پڑ رہی ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply