امریکہ ایٹمی معاہدے پر عمل کرکے ایران پر عائد پابندیاں ختم اُٹھائے

0

امام خامنہ ای کے مطابق اسلامی انقلاب سے سامراجی طاقتوں کی دشمنی کی بنیادی وجہ اسلامی انقلاب اور اسلامی جمہوری نظام نے مشرقی اور مغربی کی سپر طاقتوں کے بنائے ہوئے تسلط پسندانہ نظام کو مسترد کردیا اور اس کے مقابلے میں ڈٹ گیا۔۔۔

تہران (میزان نیوز) رہبر انقلاب اسلامی ایران آیت اللہ العظمیٰ سید علی خامنہ ای نے کہا ہے کہ ایران کسی یقین دہانی کے بجائے امریکہ سے کہتا ہے کہ وہ ایٹمی معاہدے کو مکمل عمل شروع کرکے ایران پر عائد تمام پابندیاں ختم کرئے، بدھ کو تبریز کے عوام کی فروری انیس سو ستتر کی انقلابی تحریک کی سالگرہ کے موقع پر اپنے خطاب میں اسلامی انقلاب میں آذربائیجان بالخصوص تبریز کے عوام کے ناقابل فراموش کردار اور ان کی فداکاریوں کو خراج تحسین پیش کیا ہے، اُنھوں نے اسلامی انقلاب سے سامراجی طاقتوں کی دشمنی کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ اسلامی انقلاب اور اسلامی جمہوری نظام نے مشرقی اور مغربی کی سپر طاقتوں کے بنائے ہوئے تسلط پسندانہ نظام کو مسترد کردیا اور اس کے مقابلے میں ڈٹ گیا، آیت اللہ خامنہ ای نے کہا کہ اسلامی انقلاب سے پہلے امریکہ اور سابق سوویت یونین نے دنیا میں جابرانہ نظام کی حکمرانی قائم کر رکھی تھی، ایک حصے پر سوویت یونین کا تسلط تھا اور دوسرے پر امریکہ کا، رہبر انقلاب اسلامی نے کہا چونکہ اسلامی انقلاب نے سامراجی نظام اور اس تقسیم کو مسترد کردیا اس لئے سامراجی طاقتیں اسلامی نظام کی دشمن ہیں، انھوں نے کہا کہ کبھی انسانی حقوق کا مسئلہ اٹھایا جاتا ہے، کبھی ایران کی ایٹمی توانائی اور کبھی علاقے میں اس کے اثر و رسوخ کی بات کی جاتی ہے، یہ سب بہانہ ہے، بنیادی وجہ صرف یہ ہے کہ ایران نے تسلط پسندی کو مسترد کردیا ہے، رہبر انقلاب اسلامی نے کہا کہ ایٹمی معاہدے کے حوالے سے ایران اب امریکہ اور یورپ کے وعدوں پر نہیں بلکہ صرف ان کے عمل پر توجہ دے گا، رہبر انقلاب اسلامی نے صاف اور واضح لفظوں میں کہا ہے کہ ایٹمی معاہدے کے تعلق سے صرف ایران کو شرط رکھنے کا حق حاصل ہے امریکہ یا کسی دوسرے اور فریق کو نہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply