اسرائیل کا بیت المقدس، میں فلسطینی زمین پر توسیع منصوبے کا آغاز

0

اسرائیلی شہری نے اپنی گاڑی سے ایک فلسطینی راہ گیر کو کچل دیا فلسطینی ذرائع ابلاغ مطابق شہید کی شناخت عزام جمیل کے نام سے ہوئی ہے جنکا تعلق نابلس کے علاقے کفر قلیل سے تھا جبکہ حملہ آور دہشت گرد کا تعلق ارئیل کالونی سے ہے۔۔۔

تل ابیب (میزان نیوز) سعودی عرب کی سربراہی میں عرب ملکوں کے اسرائیل سے تعلقات استوار کرنے کے باوجود غاصب ریاست فلسطینی علاقوں میں توسیع منصوبوں پر کام جاری رکھے ہوئے ہے، متحدہ عرب امارات نے اسرائیل سے تعلقات قائم کرتے وقت اپنے شہریوں اور عرب عوام کو مطمئن کرنے کیلئے اسرائیل سے تعلقات کی بنیاد یہ بتائی تھی کہ غاصب ریاست توسیع پسندی کی اپنی سابق پالیسی کو ترک کردے گا، تاہم غاصب ریاست نے توسیع پسندی کی اپنی پالیسی جاری رکھتے ہوئے مقبوضہ بیت المقدس کے شمال میں واقع بسغات زئیو یہودی کالونی میں توسیع کا منصوبہ شروع کردیا ہے، منصوبے کے تحت یہودی کالونی میں مزید 900 مکانات، تجارتی مراکز، شمالی اور مغربی بیت المقدس کے درمیان ریلوے پٹری بچھائے جانے کا منصوبہ شامل ہے، اسرائیلی حکومت نے اس کالونی میں فلسطینیوں کی زمین پر ایک بڑا پارک تعمیر کرنے منظوری دی ہے، منصوبے کا ٹھیکہ موریا نامی ایک کمپنی کو دیا گیا ہے، یاد رہے کہ غاصب اسرائیل نے بسغات زئیو کالونی 1967ء کی عرب اسرایل جنگ کے دوران قبضہ کردہ زمین پر تعمیر کی تھی، کالونی کے قیام کے بعد شمال مغربی بیت المقدس کے بہت سے علاقوں کا آپس میں زمینی رابطہ کٹ گیا تھا، دوسری جانب مقبوضہ مغربی کنارے کے شمالی شہر سلفیت میں حارث چوک پر ایک اسرائیلی شہری نے اپنی گاڑی سے ایک فلسطینی راہ گیر کو کچل دیا، جس کے نتیجے میں وہ موقع پر ہی دم توڑ گیا، فلسطینی ذرائع ابلاغ کے مطابق شہید کی شناخت عزام جمیل عامر کے نام سے کی گئی ہے، جس کا تعلق مشرقی نابلس کے علاقے کفر قلیل سے تھا، جب کہ حملہ آور دہشت گرد کا تعلق ارئیل کالونی سے ہے، ادھر اسرائیلی فوج نے مقبوضہ مغربی کنارے کے شمالی شہر جنین میں طورہ کے مقام پر ایک فلسطینی کا مکان مسمار کر ڈالا، فلسطینی ذرائع ابلاغ کے مطابق غاصب اسرائیلی فوج نے اسیر محمد کبہا کے مکان کا محاصرہ کیا اور اس کے بعد اسے دھماکہ خیز مواد لگا کر اڑا دیا۔

Share.

About Author

Leave A Reply