اسرائیل، شامی مقبوضہ علاقے جولان پر قبضہ ختم کرئے، اقوام متحدہ

0

اقوام متحدہ کے اراکین کی بھاری اکثریت سے منظور کردہ قرارداد میں مسئلہ فلسطین کو پر امن طریقے سے حل کرانے اور فلسطین کے مقبوضہ علاقوں میں یہودی آبادکاریاں اور بستیوں کی تعمیر کو غیر قانونی قرار دینے پر زور دیا گیا ہے۔۔۔

اقوام متحدہ نے شام کے مقبوضہ علاقے جولان اور مقبوضہ فلسطین سے اسرائیلی قبضہ ختم کرانے کی حمایت میں پانچ قراردادیں منظور کرلی ہیں، اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے شام کے علاقے جولان اور مقبوضہ فلسطین کی حمایت میں پیش کی جانے والی پانچ تجاویز کو منظور کرلیا، اقوام متحدہ نے 29 نومبر کو فلسطینی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کے عالمی دن کی مناسبت سے ہونے والے ایک اجلاس کے دوران قراردادیں منظور کیں، امریکہ برطانیہ اور اسرائیل نے اِن قراردادوں کی منظوری کی مخالفت کی ہے، شام کے دفاعی اہمیت کا حامل مقبوضہ جولان کے سلسلے میں پیش کی جانے والی پہلی قرارداد میں اس بات پر زور دیا گیا ہے کہ اسرائیل علاقہ خالی کرکے جولان پر شام کی حاکمیت کو تسلیم کرئے، جولان کے پہاڑی سلسلے پر عرب اسرائیل جنگ کے دوران 1967ء میں اسرائیلی فوج کے قبضے میں چلا گیا تھا، یہ قرارداد 89 ووٹوں سے منظور کی گئی، اسکے علاوہ فلسطین کی حمایت میں چار قراردادیں منظور کی گئی جن میں فلسطین کے سلسلے میں اقوام متحدہ کی ذمہ داریوں پر زور دیئے جانے کے علاوہ مسئلہ فلسطین کو پر امن طریقے سے حل کرنے اور فلسطین کے مقبوضہ علاقوں میں یہودی آبادکاری اور بستیوں کی تعمیر کو غیر قانونی قرار دیا گیا ہے، ساتھ ہی قرارداد میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ کو مسئلہ فلسطین کے حل اور فلسطینی عوام کے حقوق کی دلوانے کیلئے اپنی ہر ممکن کوشش کرنی چاہیئے۔

Share.

About Author

Leave A Reply