Daily Archives: December 28, 2016

English
0

Israeli settlements destroy hopes for peace:Kerry

Secretary of State John Kerry defended the United States’ decision to abstain – and not veto – a UN resolution condemning Israeli settlements in occupied Palestinian territories, saying Israel’s policies put the so-called two-state solution “in serious jeopardy.”

سیاست
0

آصف زرداری نے گرفتاری سے بچنے کیلئے الیکشن لڑنیکا فیصلہ کیا، نوازلیگ

جب ایک بار کوئی بھی شخص رکنِ قومی اسمبلی بن جاتا ہے تو اسے گرفتار کرنے کیلئے اسمبلی کے اسپیکر سے منظوری لینا ہوتی ہے جو آسانی سے نہیں ملتی آج بہت سے ارکان قومی اسمبلی اشتہاری ہیں جن کو گرفتار نہیں کیا جاسکتا لہذا یہ رکن اسمبلی بننے کا فیصلہ آصف زرداری کے اپنے مفاد میں کیا ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

بین الاقوامی
0

نوازحکومت نے بحرینی بادشاہ کو نایاب تلور کا شکار کیلئے پرمٹ جاری کردیئے

صوبہ سندھ اور بلوچستان میں نایاب پرندے کے شکار کیلئے جن افراد کو پرمٹ جاری کیے گئے ہیں ان میں بادشاہ کے علاوہ اِن کے ایک بزرگ رشتہ دار، بادشاہ کے مشیر دفاع، ایک فیلڈ مارشل اور آرمی چیف جبکہ شاہی خاندان کے دیگر دو اراکین شامل ہیں بحرین کے بادشاہ کو جامشورو کا علاقہ شکار کیلئے فراہم کیا گیا ۔۔۔۔۔۔

حالات حاضرہ
0

سندھ حکومت کی نفرت انگیز تقاریر کے خلاف مہم میں سنجیدگی کا شدید فقدان

رواں سال پولیس نے وال چاکنگ کے 82525 مقدمات درج کیے لیکن صرف 546 مقدمات میں ہی فرد جرم عائد کی جاسکی اور ان میں سے صرف 47 مقدمات کا فیصلہ ہوا پولیس نے 78 افراد کو گرفتار کیا جن میں 50 کو ناکافی ثبوتوں کی وجہ سے چھوڑ دیا گیا دیگر 22 افراد نے ضمانت حاصل کرلی جبکہ 3 کو جیل بھیج دیا گیا ۔۔۔۔۔۔۔۔

جنگی حالات
0

پیپلزپارٹی نےاپنے 4مطالبات کےحق میں لانگ مارچ کرنیکا فیصلہ کیاہے

لانگ مارچ کا اعلان نوازشریف کی پالیسیوں پرعدم اعتماد ہے مطالبات کی منظوری کیلئے تمام جمہوری طریقوں سے حکومت پر دباؤ ڈالیں گے اب پارلیمان کے اندر اور باہر حکومت پر دباؤ میں شدت آئے گی اگر ہمارے دباؤ سے حکومت بھاگ جاتی ہے تو بھاگ جائے پارٹی کارکنان کو الیکشن کی تیاری کا کہہ دیا ہے ۔۔۔۔۔۔۔

ملکی
0

بلاول بیٹا اپنی تاریخ پڑھو اپنے حجم سے بڑی باتیں مت کرو، خواجہ سعد رفیق

پاکستان پیپلزپارٹی ایک سیاسی حقیقت ہے لیکن وہ شہادتیں گنوانے کے بجائے کچھ کرکے دکھائے ہماری پارٹی میں بلی کی طرح میاؤں میاؤں نہیں کیا جاتا بلکہ معاملات پر رائے لی جاتی ہے ذوالفقار علی بھٹو کا دور سول آمریت کا دور تھا 1971ء میں اکثریت کا فیصلہ مان لیتے تو شاید ملک دو ٹکڑے نہ ہوتا ۔۔۔۔۔۔۔۔