ٹرمپ سرد جنگ کا دور واپس لانا چاہتے ہیں روس کو 60 روزہ مہلت

0

روس عالمی معاہدے کی خلاف ورزی نہیں کررہا امریکہ 80 کی دہائی میں کئے معاہدے کو سبوتاژ کرنا چاہتا ہے روسی میزائل یورپ میں ہدف کو نشانہ بنانے کی حاصل کرنیکی صلاحیت حاصل کررہا ہے ۔۔۔۔

واشنگٹن (میزان نیوز) امریکا نے روس کو 60 دن کی مہلت دیتے ہوئے دھمکی دی ہے کہ اگر ماسکو واشنگٹن کے تحفظات دور کرنے میں ناکام ہوتا ہے تو سرد جنگ دور کے جوہری معاہدے سے دستبراری کا عمل شروع ہو جائے گا، روس نے واضح کیا ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ ہر عالمی معاہدے سے دستبردار ہونا چاہتا ہے، روس کسی عالمی معاہدے کی خلاف ورزی نہیں کررہا ہے، امریکہ 80 کی دہائی میں کئے گئے معاہدے کو سبوتاژ کررہا ہے، فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق امریکی سیکریٹری آف اسٹیٹ مائیک پومپیو نے کہا کہ روس نے انٹر میڈیٹ رینج کروز میزائل ایس ایس سی 8 تیار کر لئے ہیں، جو انٹر میڈیٹ رینج نیو کلیئر فورسز ٹریٹی کی خلاف ورزی کی ہے، انہوں نے نیٹو اتحادی ممالک سے ملاقات کے بعد صحافیوں کو بتایا کہ مذکورہ روسی میزائل یورپ کے شہروں میں اپنا ہدف حاصل کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں، واضح رہے کہ امریکی اور روسی صدر رونلڈ ریگن اور گورباچوف نے 1987ء میں اس معاہدے پر دستخط کیے تھے، اس سے قبل اکتوبر میں امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا تھا کہ ہم نے معاہدے کی پاسداری کی اور معاہدے کا احترام کیا لیکن افسوس کے ساتھ روس نے معاہدے کا احترام نہیں کیا اس لئے ہم جوہری معاہدہ منسوخ کررہے ہیں۔Image result for trump and putinانہوں نے مزید کہا تھا کہ روس نے معاہدے کے خلاف ورزی کی اور وہ کئی برسوں سے مسلسل معاہدے کو نقصان پہنچاتا رہا تھا، مجھے نہیں معلوم کہ سابق صدر بارک اوباما نے روس کے ساتھ اس معاملے پر مذاکرات یا معاہدہ سے دستبرداری کا اعلان کیوں نہیں کیا؟، اس ضمن میں واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ انتظامیہ نے ماسکو کے 9 ایم 729 میزائل سے متعلق شکایت کی اور کہا تھا کہ مذکورہ میزائل 500 کلو میڑ سے زائد دور موجود اپنے ہدف کو نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے جو کہ آئی این ایف معاہدے کے خلاف ورزی ہے، گزشتہ پانچ دہائیوں میں امریکہ اور روس نے جوہری ہتھیار کی تعداد اور رفتار سے متعلق متعدد معاہدے کیے ہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply