شام کی فضاء محفوظ اینٹی ایئرکرافٹ سسٹم سے اسرائیلی جارحیت ناکام

0

روس کے فراہم کردہ اینٹی ایئرکرافت سسٹم ایس 400 کی بدولت اسرائیلی جارحیت کا داندان شکن جواب دیا جارہا ہے شامی فوج کے مطابق اینٹی ائیر کرافٹ سسٹم دشمن کی ہر جارحیت کا مقابلہ کرسکتا ہے ۔۔۔۔۔۔

دمشق (میزان نیوز) شامی فوج کے اینٹی ایئرکرافٹ یونٹ نے ملک کے جنوبی علاقے میں اسرائیل کا ایک جنگی طیارہ مار گرایا ہے، شام کے فوجی ذرائع کے حوالے سے العالم کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شامی فوج کے اینٹی ایئرکرافٹ یونٹ نے جمعرات کی رات ملک کے جنوب میں دمشق کے قریب واقع علاقے الکسوہ کی فضا میں اسرائیلی جارحیت کے جواب میں کارروائی کرتے ہوئے اسرائیل فوج کا ایک جنگی طیارہ اور چار میزائلوں کو تباہ کر دیا، اسرائیلی طیارہ شامی فوج کے فوجی کمپاؤنڈ کو نشانہ بنانے کا ارادہ رکھتے تھے، روس کے فراہم کردہ اینٹی ایئرکرافت سسٹم ایس 400 کی بدولت اسرائیلی جارحیت کا داندان شکن جواب دیا جارہا ہے، شامی فوج کے ایک ذریعے نے روسی خبر رساں ایجنسی سے گفتگو میں کہا ہے کہ شامی فوج کا اینٹی ایئر کرافٹ سسٹم دشمن کی ہر جارحیت کا بھرپور مقابلہ کرنے کی مکمل صلاحیت رکھتا ہے اور یہی وجہ ہے کہ اس سسٹم کے ذریعے اسرائیل کے تمام میزائلوں کو ہدف تک پہنچنے سے پہلے مار گرایا گیا ہے، اسرائیل دہشت گردوں کی حمایت اور جارحیت کا مظاہرہ کرنے کیلئے ہمیشہ شامی فوج کے ٹھکانوں کو نشانہ بناتا آیا ہے۔Related imageامریکہ، اسرائیل اور سعودی عرب کی جانب سے دہشت گردوں کی حمایت کے نتیجے میں شام کا بحران دو ہزار گیارہ سے جاری ہے، شام میں اقتدار اعلیٰ کی تبدیلی کیلئے سعودی عرب اور ترکی نے اس ملک میں کھلی مداخلت کی ہے، دوسری طرف شام کی وزارت خارجہ نے اپنے مراسلے میں کہا ہے کہ مشرقی شام خاص طور سے صوبے دیرالزور کے علاقوں پر امریکی اتحاد کے حملے بین الاقوامی قوانین کے منافی ہیں جس سے اس بات کی بھی نشاندہی ہوتی ہے کہ امریکہ و اسرائیل کی جانب سے انسانی اقدار کا گلا گھونٹا جارہا ہے، شام کی وزارت خارجہ کے مراسلے میں کہا گیا ہے کہ امریکہ و اسرائیل ہی شام میں بحران کے طول پکڑنے کی وجہ بنے ہیں، اسرائیل کے جنگی طیاروں نے جمعرات کو جنوبی شام کے علاقوں پر بمباری کی ہے، یہ ایسی حالت میں ہے کہ امریکی اتحاد کی جانب سے شام کے مختلف اور خاص طور سے مشرقی شام کے علاقوں پر بارہا حملے کئے جاتے رہے ہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply