ایرانی ریسلر کو اسرائیلی کھلاڑی سے نہ لڑنے پر چھ ماہ کی پابندی کا سامنا

0

ریسلرعلی رضا کریمی نے اپنے کوچ کے مشورے پر اسرائیل کے کھلاڑی سے کھیلنے سے اجتناب کرتے ہوئے میچ ہارنے کو ترجیح دی اسلامی جمہوریہ ایران اسرائیل کو ناجائز ریاست قرار دیتا ہے ۔۔۔۔۔

نیویارک (میزان نیوز) ریسلنگ کی عالمی تنظیم نے ایرانی ریسلر پر اپنے مخالف سے جان بوجھ کر میچ ہارنے اور اگلے مرحلے میں اسرائیلی ریسلر کا سامنا کرنے سے اجتناب کرنے پر چھ ماہ کی پابندی عائد کردی ہے، اس فیصلے کا اعلان یونائیڈیڈ ورلڈ ریسلنگ ڈسپلنری چیمبر نے جمعہ کو کیا، واضح رہے کہ ایرانی ریسلر علی رضا کریمی گزشتہ سال پولینڈ میں کھیلے جانے والے ورلڈ انڈر 23 ریسلنگ مقابلوں میں اپنے روسی مخالف کے خلاف تین دو کی برتری کے ساتھ جیت رہے تھے جب ان کے کوچ کو احساس ہوا کہ اگلے راؤنڈ میں ان کا مقابلہ اسرائیل کے ریسلر کے ساتھ ہو گا، اس پر علی کریمی نے اپنے کوچ کے مشورے پر اسرائیل کے کھلاڑی سے کھیلنے سے اجتناب کرتے ہوئے میچ ہارنے کو ترجیح دی، اسلامی جمہوریہ ایران اسرائیل کو ناجائز ریاست قرار دیتے ہوئے اس سے کسی بھی طرح کے تعلقات قائم کرنے کو پسند نہیں کرتا ہے۔

Related image

میچ کے بعد علی رضا کریمی نے اپنے انسٹا گرام پیج پر ایک ویڈیو جاری کی جس میں وہ رات کے وقت پیدل چلتے جارہے ہیں اور پس منظر میں چلنے والے گانے کے بول کہہ رہے کہ خاموشی ہی آخری چارہ ہے، میچ کے بعد سوشل میڈیا پر یو مسٹ لوسٹ اور # باید_ببازی کے ہیش ٹیگ ٹرینڈ کرنے لگے جس میں لوگوں نے علی رضا کے جراتمندانہ اقدام کو خوش آئند قرار دیا جنھوں نے اپنے کوچ کے مشورے پر اسرائیلی ریسلر سے نہ لڑنے کا فیصلہ کیا، ایران کی ریسلنگ فیڈریشن نے کہا ہے کہ وہ یونائیڈیڈ ورلڈ ریسلنگ ڈسپلنری چیمبر کی جانب سے عائد کی جانے والی پابندی کو چیلنج کرے گی، یونائیڈیڈ ورلڈ ریسلنگ ڈسپلنری چیمبر کا کہنا ہے کہ علی کریمی اپنے کوچ کے کہنے پر جان بوجھ کر میچ ہارے، تنظیم کے مطابق ایرانی ریسلر اور کوچ ریسلنگ کے بین الاقوامی قوانین اور یونائیڈیڈ ورلڈ ریسلنگ ڈسپلنری قواعد کی براہ راست خلاف ورزی کے مرتکب پائے گئے، واضح رہے کہ ایران اور اسرائیل کے درمیان سفارتی تعلقات نہیں ہیں اور ماضی میں بھی ایرانی کھلاڑیوں اسرائیل کے ساتھ کھیلنے سے اجتناب کرتے ہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply